چیچنیا میں یورپ کی سب سے بڑی مسجد کا افتتاح ، ہزاروں افراد نے شرکت کی

ماسکو: اسلام روس کا دوسرا بڑا مذہب ، مساجد اور اسلامی مراکز میں‌تیزی سے اضافہ ہونے لگا . اطلاعات کے مطابق چیچنیا میں یورپ کی سب سے بڑی مسجد کا افتتاح کردیا گیا ، جسے یورپ کی سب سے بڑی مسجد کہا جارہا ہے۔مسجد کی افتتاحی تقریب میں بڑی تعداد میں مقامی اور غیرملکی حکام نے شرکت کی۔

People gather outside a new mosque named after the Prophet Mohammed, the largest in Europe according to local authorities, during an inauguration ceremony, in the Chechen town of Shali, Russia August 23, 2019. REUTERS/Said Tsarnayev

روسی ذرائے ابلاغ کے مطابق سفید ماربل سے بنی اس خوبصورت مسجد کا نام حضرت محمدﷺ کے اسم مبارک پر رکھا گیا ہے اور اس میں 30 ہزار سے زائد نمازیوں کی گنجائش ہے۔ مسجد کے صحن میں پھولوں اور فاؤنٹینز کو لگایا گیا ہے اور اس جگہ پر اضافی 70 ہزار نمازی آسکتے ہیں۔ادھر مشرق وسطیٰ کے ایک اخبار دی نیشنل کے مطابق اس 9ہزار 7سو اسکوائر میٹر پر موجود اس مسجد کو ایک ازبک آرکیٹک نے ڈیزائن کیا۔خیال رہے کہ یہ مسجد چیچنیا میں شہالی کے علاقے میں قائم کی گئی ہے، جو دارالحکومت گرونزے کے باہر 54ہزار لوگوں پر مشتمل علاقہ ہے۔

People walk near a mosque named after the Prophet Mohammed, the largest in Europe according to local authorities, after an inauguration ceremony in the Chechen town of Shali, Russia August 23, 2019. REUTERS/Said Tsarnayev

اس مسجد کے افتتاح کی منعقدہ تقریب میں روسی صدر ولادی میر پیوٹن کے ساتھی چیچن سربراہ رمضان کیدرو کا کہنا تھا کہ یہ مسجد اپنے ڈیزائن میں منفرد اور اپنے سائز اور خوبصورتی میں شاہانہ ہے’۔اس مسجد کی افتتاحی تقریب میں سینئر حکام نے شرکت کی جس میں کویتی امیری دیوان کے مشیر اور چیئرمین انٹرنیشنل اسلامک چیئرٹ ایبل آرگنائزیشن (آئی آئی او سی) ڈاکٹر عبداللہ الماتوق بھی موجود تھے۔

Participants, including head of the Chechen Republic Ramzan Kadyrov, attend an inauguration ceremony outside a new mosque named after the Prophet Mohammed, the largest in Europe according to local authorities, in the town of Shali, Russia August 23, 2019. REUTERS/Said Tsarnayev

ذرائع کے مطابق چیچنیا حکومت کی طرف سے رمضان کیدرو کو 2007 میں مسلم اکثریتی علاقے میں حکمرانی کے لیے مقرر کیا گیا تھا، جس کے بعد سے وہ چیچنیا میں اسلام کی بحالی اور مساجد کی تعمیر میں مصروف ہیں۔2008 میں انہوں نے گرونزے میں 10 ہزار نمازیوں کی گنجائش رکھنے والی مسجد ‘چیچنیا کا دل’ کا افتتاح کیا تھا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.