ورلڈ ہیڈر ایڈ

کراچی ، سندھ میں نام نہاد خدمت کی ضرورت نہیں ، اگر ایسی کوشش ہوئی تو سندھو دیش اور پختونستان بنا دیں گے ، بلاول کی دھمکی

حیدرآباد : بلاول بھٹو وفاقی حکومت کی طرف سے کراچی کے لوگوں کو مسائل اور مشکلات سے نکالنے کے دعوے کے بعد سخت اور لسانی تعصب پر مبنی دھمکیاں دینی شروع کردی ہیں، اطلاعات کے مطابق بلاول نےکہا کہ کراچی اور سندھ میں اگر وفاقی حکومت نے خدمت کے نام پر مداخلت کی تو پھر یاد رکھیں اگر ہمیں نہ کھیلنے دیا گیا تو ہم بھی کھیلنے نہیں‌دیں گے ، اور اگر ایسا ہوا تو ہم اقتدار میں مداخلت کرنے والوں کو سندھو دیش اور پختونستان کا تحفہ دیں‌گے ،

حیدرآباد میں پریس کانفرنس کے دوران بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ اس وقت ملک مشکل ترین دور سے گزر رہا ہے، پاکستان کو آج جمہوریت سے آمریت کی طرف دھکیلا جا رہا ہے، جمہوریت کا سفر زوال کی طرف جا رہا ہے، غیر جمہوری قوتوں نے ہم سب پر حملے کیے، ہم سب کو مل کر اس کا مقابلہ کرنا ہے، کٹھ پتلی حکومت نے آئین پر حملے کیے، ملک کی معیشت کو کمزور کیا گیا، عوام پر مہنگائی کا بوجھ ڈالا گیا۔

ذرائع کےمطابق چئیرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ہم نے 18ویں ترمیم کی صورت میں آئین کو بحال کیا، لیکن وزیراعظم نے سندھ میں کہا کہ 18ویں ترمیم کے باعث وفاق دیوالیہ ہو رہا ہے، جبکہ حقیقت یہ ہے کہ وفاق کی وجہ سے صوبے دیوالیہ ہو رہے ہیں، وفاقی حکومت خود اپنا ٹیکس جمع نہیں کرتی، نااہل حکومت کی وجہ سے ہر صوبے کو کم پیسہ مل رہا ہے۔

حسب عادت چیئرمین پیپلز پارٹی نے پی ٹی آئی کی حکومت کو مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ یہ لوگ آئین کی خلاف ورزی کرتے جا رہے ہیں، کیا کراچی کو اسلام آباد والے چلائیں گے، اس حکومت کو گھر جانا چاہیے، ایم کیو ایم کے ارکان بھی استعفیٰ دیں، یہ کیسے ہو سکتا ہے کہ غیر آئینی طریقے سے کراچی کو اسلام آباد سے کنٹرول کیا جائے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.