لاہور میں بلی کے ساتھ کوئی ریپ نہیں، سب جھوٹ گھڑ کر کہانی بنائی اور پھیلائی گئی ، سائبر ونگ ایف آئی اے

لاہور میں بلی کے ساتھ کوئی ریپ نہیں، سب جھوٹ گھڑ کر کہانی بنائی اور پھیلائی گئی ، سائبر ونگ ایف آئی اے

باغی ٹی وی رپورٹ‌کے مطابق : چند روز پہلے سوشل میڈیا پر ایک شور مچا تھا کہ لاہور میں بلی کے ساتھ ریپ ہوا ہے اور اس پر نہ جانے کیا کچھ کہا گیا . لیکن تحقیق کے بعد ایف آئی اے نے رپورٹ جاری کی کہ ایسا واقعہ سرے سے ہوا ہی نہیں‌ . سب فیک خبریں اور افواہیں پھیلا کر پاکستان کو بدنام کیا گیا

ایسے لوگ نہ صرف معاشرے میں بدامنی کا سبب ہیں بلکہ ملک کی دنیا میں بدنامی کا باعث ہیں۔عوام کو چاہیے سوشل میڈیا پرایسی خبریں بلا تصدیق شئیر نہ کریں اس سے ملک کی بدنامی ہوتی ہے۔

واضح رہے کہ یہ جھوٹی خبرمیڈیا کی زینت بنی رہی کہ لاہور کے ایک خاندان نے ایک بلی کے بچے کو گھر میں رکھنے کے لیے خریدا. ان کا پندرہ سالہ بیٹا اپنے کزنز اور دوستوں کے ساتھ مل کر اس بلی کے بچے کا ایک ہفتے تک مسلسل ریپ کرتے رہے. جس کی وجہ سے دن بدن اس بلی کے بچے کی حالت اتنی بگڑ گئی کہ تکلیف سے نہ سو پاتا تھا نہ بیٹھ سکتا تھا نہ چل سکتا تھا.

مرنے والی حالت میں جب کوئی رحم دل اسے سرجن ڈاکٹر کے پاس لے کر گیا تو رونگٹے کھڑے کر دینے والی تصاویر نیچے دی گئی ہیں. ڈاکٹر کے مطابق اس بلی کے بچے کے ساتھ اتنا زیادہ ریپ کیا گیا تھا کہ اس کے دونوں ہولز ختم ہو کر ایک ہول کی شکل اختیار کر چکے تھے اس کے اندر سے مسلسل بلیڈنگ جاری تھی.

ڈاکٹرز کے مطابق ایک سے زیادہ کئی لوگوں کے سپرمز اندر موجود تھے. اندر سے سارے ارگنز پھٹ چکے تھے. ریپ میں استعمال کرتے ہوئے پلاسٹک شاپر اس کے اندر گھسیڑے گۓ تھے. کل رات وہ بلی کا بچہ مر گیا ہے

لاہور میں نوجوان کا کزنز اور دوستوں کے ساتھ مل کر بلی کے بچے کا "ریپ "

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.