fbpx

بی جے پی رہنما قحبہ خانے چلانے کے الزام میں گرفتار

فارم ہاؤس سے کمسن لڑکوں لڑکیوں سمیت 73 گرفتار

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق بھارت کی حکمران جماعت بی جے پی کے رہنما کو قحبہ خانے چلانے کے الزام میں گرفتار کر لیا گیا ہے

بی جے پی کے رہنما برنارڈ این مراک کو پولیس نے اترپردیش سے گرفتار کیا ہے،میڈیا رپورٹس کے مطابق پولیس کا کہنا ہے کہ بی جے رہنما رہنما میگھالیہ میں اپنے فارم ہاؤس میں فحاشی کا اڈہ چلا رہے تھے، برنارڈ این مراک بی جے پی کی ریاستی یونٹ کے نائب صدر ہیں، پولیس نے ہفتے کے روز انکے فارم ہاؤس پر چھاپہ مارا تھا جہاں سے لڑکیاں اور لڑکے برہنہ حالت میں ملے تھے وہیں شراب کی بھی بھاری مقدار برآمد ہوئی تھی، واقعہ کے بعد بی جے پی رہنما فرار ہو گئے تھے تا ہم پولیس نے انکے وارنٹ جاری کئے اور گرفتار کر لیا،

پولیس کے مطابق برنارڈ این مراک کے فارم ہاؤس سے 73 افراد کو گرفتار کیا گیا تھا،ان میں کئی کمسن بھی تھے، فارم ہاؤس پر چلنے والے اڈے میں کمسن لڑکوں اور لڑکیوں کے ساتھ زیادتی کی جاتی تھی، پولیس حکام کے مطابق برنارڈ این مراک کو ہاپوڑ سے گرفتار کیا گیا ہے۔ ملزم کو تحقیقات کے لئے بلایا گیا تھا اور تعاون کے لئے کہا گیا تھا لیکن ملزم نے تعاون نہیں کیا اور روپوش ہو گیا تھا جس کے بعد ملزم کو گرفتار کیا گیا ہے،

بی جے پی کے رہنما کے فارم ہاؤس پر قحبہ خانہ چلنے پر کانگریس نے بی جے پی پر کڑی تنقید کی ہے اور کہا ہے کہ مودی دیکھیں انکے پارٹی لیڈر کیا کام کر رہے ہیں مودی سرکار سے عوام کو کسی بھلائی کی توقع نہیں رکھنی چاہئے،کانگریس نے مطالبہ کیا کہ بے جی پی کے تمام رہنماؤں کے فارم ہاؤسز کو چیک کیا جائے، ہر کہیں سے غیر قانونی دھندے نظر آئیں گے

طالب علم سے زیادتی کر کے ویڈیو بنانیوالے ملزم گرفتار

ملازمت کے نام پر لڑکیوں کی بنائی گئیں نازیبا ویڈیوز،ایک اور شرمناک سیکنڈل سامنے آ گیا

200 سے زائد نازیبا ویڈیو کیس میں اہم پیشرفت

نازیبا ویڈیو سیکنڈل،پولیس لڑکیوں کو بازیاب کروانے میں تاحال ناکام