بجٹ میں کابینہ ارکان کی تنخواہوں میں کتنی کمی کر دی گئی؟ سن کر آپ بھی حیران رہ جائیں گے

وفاقی حکومت کی جانب سے حالیہ بجٹ میں نئی روایت قائم کرتے ہوئے کابینہ ارکان کی تنخواہوں میں کمی کا اعلان کر دیا گیا ہے۔ یہ پہلا موقع ہے کہ کسی حکومت میں‌ کابینہ کے تمام وزراء کی تنخواہوں میں دس فیصد کمی کا فیصلہ کیا گیا ہے. بجٹ میں حکومت کی طرف سے کئے گئے اس فیصلہ کو اچھی نظر سے دیکھا جارہا ہے.

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق قومی اسمبلی میں بجٹ تقریر کے دوران وزیر مملکت برائے ریونیو حماد اظہر نے بتایا کہ کابینہ ارکان کی تنخواہوں میں کمی کر دی گئی ہے. ان کا کہنا تھا کہ ماضی میں ہمیشہ کابینہ اپنی تنخواہیں بڑھاتی تھی لیکن وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں کابینہ کے تمام وزرا نے اپنی تنخواہوں میں 10 فیصد کمی کا تاریخی فیصلہ کیا ہے۔ وفاقی حکومت نے وزرا ، وزرائے مملکت اور پارلیمانی سیکرٹریز کے ساتھ کام کرنے والے سپیشل پرائیویٹ سیکرٹریز کے سپیشل الاﺅنس میں 25 فیصد اضافہ کیا ہے۔

وفاقی حکومت کی جانب سے گریڈ 21 اور 22 کے ملاز مین کی تنخواہوں میں کسی قسم کا اضافہ نہیں کیا گیا۔ وفاقی کابینہ کی گریڈ 1 تا 16سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں10فیصد اضافےکی منظوری دی گئی ہے جبکہ گریڈ 17 سے 20 تک پانچ فیصد اضافہ کی منظوری دی گئی ہے. اسی طرح ریٹائرڈ ملازمین کی پنشن میں 10 فیصد اضافے کی منظوری دی گئی ہے.

حماد اظہ کا کہنا تھا کہ گریڈ 21 اور 22 کے سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ نہیں کیا گیا کیونکہ انہوں نے وطن عزیز پاکستان کی معاشی صورتحال کے پیش نظر تنخواہوں میں‌ اضافہ نہ کئے جانے کی قربانی دینے کا فیصلہ کیا ہے.

واضح رہے کہ وفاقی کابینہ کی جانب سے گریڈ 1 تا16سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں10فیصد اضافےکی منظوری دے دی ہے. اسی طرح ریٹائرڈ ملازمین کی پنشن میں 10 فیصد اضافے کی منظوری دی گئی ہے.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.