رشوت لیکر گھوسٹ سکول کھلوانے پرعثمان بزداربھائی اور فرنٹ مین سمیت اینٹی کرپشن میں طلب

ڈیرہ غازیخان(باغی ٹی وی )بھتہ ورشوت لیکر بھوت اسکولز کھلوانے اور ان اسکولزبھوت اسکولز سے مالی مفادات اٹھانے والے افراد کی سرپرستی کرنے کے الزام میں سابق وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار اور انکے بھائیوں سمیت انکے مبینہ فرنٹ مین طور بزدار کے خلاف انٹی کرپشن میں انکوائری شروع ۔انٹی کرپشن نے مدعی بشیر احمد چوہان اور عثمان بزدار سمیت دیگر الزام علیہان کو سوموار کو طلب کرلیا ۔۔تفصیلات کے مطابق سابق وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار کے علاقے کھرڑ بزدار میں 16 گھوسٹ سکولوں کا انکشاف ہوا ہے یہ اسکولز تمن بزدار کے علاقے کھرڑ بزدار میں بتائے گئے ہیں ۔ان میں14 پرائمری سکول ایک مڈل اور ایک ہائی سکول ہے ۔۔طریقہ واردات یہ معلوم ہوا ہے کہ کھرڑ بزدار کے درجنوں افراد سے لاکھوں روپے رشوت لیکر ان کے گھروں کو ہی بستی قرار دیکر وہاں سکول کھلوا دیا جاتا ۔۔یوں حکومتی خزانے سے ایک عمارت اور درجہ چہارم کی ایک نوکری رشوت دینے واصے شخص کو مل جاتی جبکہ ان اسکولز میں تعینات تدریسی ملازمین اپنی تنخواہ میں سے ایک مخصوص حصہ عثمان بزدار کے مبینہ فرنٹ مین طور بزدار کو دیکر گھر بیٹھے سرکاری خزانے سے تنخواہیں وصول کرتے رہتے ۔۔جن اسکولز کو بھوت سکول بتایا جارہا ہے ان میں کھرڑ بزدار میں گورنمنٹ پرائمری سکول غلام رسول ۔غلام مصطفی ۔۔ ملک شیر محمد ۔تاج محمد ۔لال محمد ۔۔ عبدالرحیم ۔احمد جٹ ۔حاجی دینو سمیت طور خان ۔ دین محمد۔۔ ُدر خان۔حیات محمد رفیق ماڑبن۔ماجھیانی اور اللہ بخش شامل ہیں ان افراد کے نام سے بستی موسوم کرکے وہاں یہ اسکولز کھلوائے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔۔ ان جعلی اسکولز کی 16 سرکاری سکولوں کی عمارتوں پر بزدار خاندان کے افراد کا قبضہ ہے۔ان سرکاری سکولوں کی عمارتوں کو بطور ڈیرے اور رہائش گاہیں استعمال کیا جا رہا ہے۔تمام سکولوں کے فنڈز اور ملازمین کی تنخواہیں باقاعدگی کے ساتھ جاری ہورہی ہیں۔
ان بھوت اسکولز کےاساتذہ کو بزدار خاندان کی مکمل پشت پناہی حاصل ہے۔اینٹی کرپشن پنجاب نے محکمہ سکول ایجوکیشن سے ان سکولز میں تعینات ملازمین اور زیر تعلیم بچوں سمیت فارغ التحصیل بچوں کا ریکارڈ طلب کرتے ہوئے عثمان بزدار۔عمر بزدار ۔طوربزدار۔کو 3 اپریل 10 بجے طلب کر لیا۔ اسکے علاوہ عثمان بزدار اور ان کے بھائیوں کے ساتھ چیف ایگزیکٹو آفیسر محکمہ ایجوکیشن کو بھی طلب کر لیا گیا ہے

Leave a reply