fbpx

فوج اور قومی سلامتی کے اداروں کیخلاف مہم ناقابل برداشت ہے: وزیراعظم کی میڈیا سے گفتگو

اسلام آباد: شہباز شریف نے وزیراعظم ہاؤس کو پاکستان ہاؤس میں تبدیل کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم ہاؤس میں پورے پاکستان سے بیورو کریسی لائیں گے، اللہ نے اچکن پہنا دی ہے، فوج اور قومی سلامتی کے اداروں کے خلاف مہم ناقابل برداشت ہے، قانون اور ادارے اپنا راستہ خود لیں گے، ہم کسی کے خلاف انتقامی کارروائی نہیں کریں گے۔

وزیراعظم شہباز شریف نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سابق حکومت نے ملک کے وسائل کا ناجائز استعمال کیا، قانون اور ادارے اپنا راستہ خود لیں گے، ہم کسی کے خلاف انتقامی کارروائی نہیں کرینگے، مجھے کسی کو کچھ بتانے کی ضرورت نہیں، سب کچھ ریکارڈ میں موجود ہے، انتخابی اصلاحات ترجیج ہے، فوج اور قومی سلامتی کے اداروں کے خلاف مہم ناقابل برداشت ہے، ایسے عناصر کے خلاف قانون سخت کارروائی کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے پر اس کی روح کے مطابق عمل ہوگا، نیب کو کسی کے خلاف انتقامی کارروائی کے لیے استعمال نہیں کرینگے، وفاقی کابینہ ایک دو روز میں تشکیل پا جائے گی، پارلیمنٹ کا ڈیڑھ سال رہتا ہے، میرا فیصلہ اتحادی کرینگے، پیپلز پارٹی کو کابینہ میں آنا چاہیے۔

صحافی نے وزیراعظم سے سوال کیا اچکن کا طعنہ دینے والوں کو کیا پیغام ہے؟ جس کا جواب دیتے ہوئے شہباز شریف نے کہا کہ دیکھ لیں اللہ نے اچکن پہنا دی ہے، صدر مملکت کی طبیعت ٹھیک نہیں تو اللہ انہیں صحت دے۔

شہباز شریف کا مزید کہنا تھا کہ تارکین وطن ہمارے سفیر ہیں، ان کو ووٹنگ کا پورا حق ہے، جو ممالک دوست بننا چاہتے تھے ان سے بھی تعلقات خراب ہوگئے، عمران خان نے دوست ممالک کو بھی ناراض کیا، مودی کو مشورہ دیا ہے مسئلہ کشمیر حل کر کے پائیدار امن کی طرف چلیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ سب سے بڑاچیلنج تباہ حال معیشت اور مہنگائی پر قابو پانا ہے، تحریک انصاف والے خزانہ خالی کر گئے ہیں، گورنر اسٹیٹ بینک کے مستقبل پر بھی مشاورت ہوگی، 2 چھٹیاں خوشحال قومیں کرتی ہیں، باتوں سے قومیں نہیں بنا کرتیں، اتوار کو بھی کام کرنا پڑے گا، مہنگائی کم کرنے کیلئے طویل اور قلیل المدتی پلان بنا رہے ہیں، لیگی وزرا کے قلمدان نواز شریف فائنل کریں گے، سیاسی سرگرمیوں کے علاوہ انتشار پھیلانے کی اجازت نہیں دیں گے، (ن) لیگ کی سوچ ہے اصلاحات لائیں اور الیکشن میں جائیں، اب پنجاب اسپیڈ نہیں پاکستان اسپیڈ ہوگی۔