fbpx

کینیڈا میں ٹرک ڈرائیور نے پاکستانی مسلم خاندان کو کچل دیا

کینیڈا میں ٹرک ڈرائیور نے پاکستانی مسلم خاندان کو کچل دیا-

باغی ٹی وی : حملے میں چار افراد جاں بحق اور ایک بچہ زخمی ہوگیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ باقاعدہ منصوبہ بندی سے مسلم فیملی کو ٹارگٹ کیا گیا۔

مغربی ممالک میں اسلاموفوبیا کے بڑھتے ہوئے واقعات، کینیڈا میں جنونی ٹرک ڈرائیور نے پاکستانی خاندان کو کچل دیا، حملے میں ایک ہی خاندان کے چار افراد جاں بحق اور ایک بچہ شدید زخمی ہوا۔


کینیڈین پولیس کا کہنا ہے کہ مسلمان خاندان کے چار افراد کو سوچے سمجھے منصوبے کے تحت گاڑی کے نیچے روند کر قتل کیا گیا۔ پولیس نے اسے نفرت پر مبنی جرم قرار دیا۔

کینیڈا کے جنوبی صوبے اونٹاریو کے شہر لندن میں مسلم فیملی پر حملہ کیا گیا۔ ڈرائیور نے ٹرک فٹ پاتھ پر چڑھا کر اس خاندان کو نشانہ بنایا۔ پولیس نے بیس سالہ حملہ آور کو گرفتار کر لیا۔

کینیڈا کی مسلم تنظیموں نے واقعے کو دہشت گردی قرار دینے کا مطالبہ کیا ہے۔ حکام کے مطابق مقدمے میں دہشتگردی کی دفعات شامل کرنے پر غور کیا جا رہا ہے۔


کینیڈا کے وزیرا عظم جسٹن ٹروڈو نے واقعے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک میں اسلاموفوبیا کے لیے کوئی جگہ نہیں، واقعے کے خلاف سوشل میڈیا پر بھی شدید ردعمل سامنے آ رہا ہے۔ لوگوں نے کہا ہے کہ انہیں نا بتایا جائے کہ کینیڈا میں اسلاموفوبیا کا وجود نہیں ہے۔


وزیرا عظم جسٹن ٹروڈو نے کہا کہ لندن میں مسلم کمیونٹی اور پورے ملک کے مسلمانوں کے لئے ، جان لو کہ ہم آپ کے ساتھ کھڑے ہیں۔ ہماری کسی بھی برادری میں اسلامو فوبیا کا کوئی مقام نہیں ہے۔ یہ نفرت انگیز لہر حقیر ہے – اور اسے روکنا ہوگا۔

دوسری جانب پاکستان ٹوئٹر پینل پر بھی اس واقعے کے بعد سے MuslimsLiveMatters اور Islamophobia ٹرینڈ فہرست میں ہیں جس میں لوگ مغربی ممالک میں اسلامو فوبیا کے بڑھتے ہوئے رحجان پر تشویش اور بھر پور غصے کا اظہار کر رہے ہیں-
 https://twitter.com/kernaghant/status/1401981975406288901?s=20

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.