سی ڈی اے چڑیا گھر کی محکمہ موسمیاتی تبدیلی کے حوالے کرنے کا فیصلہ چیلنج کرے گا

وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے اکلوتے چڑیا گھر کو بچانے کے لئے چیئرمین سی ڈی اے عامر علی احمد نے شعبہ لاء کو سپریم کورٹ آف پاکستان میں اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف رٹ دائر کرنے کے احکامات جاری کئے ہیں، میٹروپولیٹن کارپوریشن اسلام آباد کی جانب سے کیس کی پیروی حافظ عرفات چوہدری کریں گے،

اسلام آباد چڑیا گھر وزارت موسمیاتی تبدیلی کے ماتحت کرنے کا فیصلہ، زرتاج گل وزیر کا زبردست خوشی کا اظہار

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق مئیر اسلام آباد شیخ انصر عزیز کی نااہلی اور عدم دلچسپی کے باعث جا نو روں کی مسلسل اموات کے بعد اسلام آباد ہائی کورٹ نے چڑیا گھر کا انتظام محکمہ موسمیاتی تبدیلی کے حوالے کرنے کے احکامات دئیے تھے، ذرائع کے مطابق اسلام آباد کے اکلوتے چڑیا گھر کو سونے کی چڑیا سمجھنے والے مئیر اسلام آباد شیخ انصر عزیز نے مسلم لیگ (ن) کے دور حکومت میں سابق ایم این اے ڈاکڑ طارق فضل چوہدری کے ساتھ ملکر مبینہ طور پر پرائیویٹائز کرنے کی کوشش کی تھی تاہم اسوقت کی بیورکریسی کی ریاست کے مفاد میں مداخلت کے باعث یہ وارادت مکمل نہ ہوسکی،

مئیر اسلام آباد کی نااہلی اور عدم دلچسپی کے باعث اسلام آباد ہائی کورٹ میں ایک سماجی ادارے کی جانب سے دائر ہونے والے رٹ پٹیشن کو درست طریقے سے پیروی نہ کرنے کے سبب چڑیا گھر کا انتظام و انصرام محکمہ موسمیاتی تبدیلی کے حوالے کرنے کے کورٹ کے احکامات جولائی کے اوائل آنے کے بعد بھی مئیر اسلام آباد کو ہوش نہیں آئی تاہم سی ڈی اے ساے ایم سی آئی کو منتقل ہونے والے چڑیا گھر کو بچانے کے لئے چیئرمین سی ڈی اے عامر علی احمد نے شعبہ لاء کو ایم سی آئی کی جانب سے سپریم کورٹ آف پاکستان میں اپیل کرنے کے احکامات جاری کئے ہیں،

چڑ یا گھر کے ذرائع کا اس حوالے سے دعوی ہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ میں ایم سی آئی حکام نے مئیر اسلام آباد کے زبانی احکامات پر ہی کیس کی ٹھیک سے پیروی نہیں کی جس کے باعث کیس کا فیصلہ ایم سی آئی کے خلاف آیا جبکہ محکمہ موسمیاتی تبدیلی اور مئیر اسلام آباد کی مبینہ ملی بھگت اس حوال سے بھی واضح ہے کہ دو سال قبل بھی یہ چڑیا گھر جانوروں کے تحفظ کے لئے کام کرنے والی ایک این جی او کو دیا جانا تھا جو اس چڑیا گھر کے نام پر بیرون ملک سے کروڑوں روپے کے فنڈز لے رہی ہے اور آج بھی جب محکمہ موسمیاتی تبدیلی کے افسران و اہلکار چڑیا گھر کا انتظام لینے آئے تواس این جی او کے اہم اراکین ان کے ہمراہ تھے۔
محمد اویس

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.