چیئرمین کراچی پورٹ ٹرسٹ کی تعیناتی، حکومت کا عدالت میں یوٹرن

چیئرمین کراچی پورٹ ٹرسٹ کی تعیناتی، حکومت کا عدالت میں یوٹرن

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیئرمین کراچی پورٹ ٹرسٹ کو عہدے سے ہٹانے کیخلاف کیس کی سماعت ہوئی،

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ کی سربراہی میں بینچ نے کیس کی سماعت کی ،حکومت کی جانب سے اٹارنی جنرل عدالت میں پیش ہوئے ،اٹارنی جنرل نے عدالت میں کہا کہ کیس کا بغورجائزہ لیا کیس کے دو پہلو نکلتے ہیں ،اگرکسی پر مس کنڈکٹ کا الزام ہے تو پہلے شفاف تحقیقات ہونی چاہئے تھی ۔اٹارنی جنرل نے چیئرمین کراچی پورٹ ٹرسٹ کو عہدے سے ہٹانے کا نوٹیفکیشن واپس لینے کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت جمیل اختر کو عہدے سے ہٹانے کا نوٹیفکیشن واپس لینے کیلئے تیارہے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ نیب کے جتنے کیسز آرہے ہیں وہ اختیارات سے تجاوز سے متعلق ہیں ،قانون کے مطابق وفاقی وزیر کو آڈٹ کرانے کااختیار نہیں تھا،سوال اٹھایا تھا ،وفاقی کابینہ کی منظوری کے بغیر کیسے پرائیویٹ آڈیٹر مقرر کردیا گیا، آڈیٹر کو فیس کی ادائیگی کا احتساب کون کرے گا؟،آپ نے بڑی مناسب اور قانونی بات کی ۔

وکیل درخواست گزار اشتراوصاف نے کہا کہ اٹارنی جنرل نے حکومت کو بہترین مشورہ دیا،عدالت نے چیئرمین کراچی پورٹ ٹرسٹ کو عہدے سے ہٹانے کا نوٹیفکیشن واپس لینے کی حکومتی استدعا منظورکرلی ،

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ اٹارنی جنرل کے بیان کے بعد درخواست نمٹا رہے ہیں ،عدالت نے حکومت کو معاملے پر قانون کے مطابق عمل کرنے کا حکم دیدیا،

کرونا لاک ڈاؤن، شادی کی خواہش رہی ادھوری، پولیس نے دولہا کو جیل پہنچا دیا

کرونا وائرس، بھارت میں 3 کروڑ سے زائد افراد کے بے روزگار ہونے کا خدشہ

بھارتی گلوکارہ میں کرونا ،96 اراکین پارلیمنٹ خوفزدہ،کئی سیاستدانوں گھروں میں محصور

لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی پر کتنے عرصے کیلئے جانا پڑے گا جیل؟

راشن نہیں چاہئے، ہمیں پاکستان واپس بھجواؤ، یو اے ای میں پھنسے پاکستانیوں کا احتجاج

بیرون ملک پھنسے پاکستانیوں کو واپس لانے کیلئے پی آئی اے کوشاں

عدالت نے کراچی پورٹ ٹرسٹ کی جمیل اختر کیخلاف یونین کی درخواست سننے سے انکارکردیا،چیف جسٹس ہائیکورٹ نے کہاکہ یونینز کی وجہ سے ادارے تباہ ہوتے ہیں ڈسپلن ہونا چاہئے، عدالت یونین کی درخواست کو سن ہی نہیں رہی ،اٹارنی جنرل کے بیان کے بعد عدالت نے کیس نمٹا دیا

واضح رہے کہ سابق چیئرمین کے پی ٹی کو عہدے سے ہٹانے کے لیے اسلام آباد ہائیکورٹ میں درخواست دائرکی گئی تھی، درخواست میں کہا گیا تھا کہ جمیل اخترکی برطرفی کے حوالے سے قانونی تقاضے پورے نہیں کیے گئے ، عدالت نے وفاقی حکومت کا نوٹفکیشن معطل کردیا تھا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.