fbpx

چیلنجز ہیں مگر پاکستان کے ڈیفالٹ کاخطرہ نہیں۔ وزیر خزانہ اسحاق ڈار

چیلنجز ہیں مگر پاکستان کے ڈیفالٹ کاخطرہ نہیں۔ وزیر خزانہ اسحاق ڈار

وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہےکہ ملک کی تاریخ میں ایسے معاشی چیلنجز پہلےکبھی نہیں آئے تاہم پاکستان کے ڈیفالٹ کاخطرہ نہیں۔ اسحاق ڈار نے مزید کہا کہ وزیراعظم کی قیادت میں اقتصادی ٹیم معیشت کی بہتری کی کوششیں کررہی ہے اور آنے والے دنوں میں معیشت میں مزید بہتری آئےگی۔

وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ ملک کی تاریخ میں ایسے معاشی چیلنجز پہلےکبھی نہیں آئے تاہم پاکستان کے ڈیفالٹ کاخطرہ نہیں یہ صرف چندناقدین کا خواب ہی رہ جائے گا۔ دوسری جانب لاہور میں گورنر پنجاب بلیغ الرحمان سے وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے ملاقات کی جس میں ملک کی مجموعی معاشی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا جب کہ گورنر نے وزیر خزانہ کو حالیہ کامیاب بیرونی دوروں پر مبارکباد دی اور معیشت میں بہتری کے لیے ان کی کوششوں کو سراہا گیا.

واضح رہے کہ ملک میں غیر یقینی کی صورتحال پیدا ہونے سے نہ صرف سرمایہ کاری متاثر ہوئی ہے بلکہ بلکہ مالی خسارہ بڑھنے سے ساتھ ساتھ روپے کی قدر کے مقابلے میں ڈالر بھی آسمان سے باتیں کر رہا ہے۔ جبکہ ملکی کرنسی اس وقت ڈالر کے مقابلے میں بہت زیادہ دباؤ کا شکار ہے، جس کی دیگر وجوہات کے علاوہ ایک سب سے بنیادی وجہ درآمدی بل میں اضافہ ہے جس سے ڈالر کی طلب میں بہت زیادہ اضافہ ہوا۔ جبکہ دوسری جانب ملکی برآمدات میں معمولی اضافہ دیکھا گیا۔ ڈالر کی قدر میں اضافے کے باعث جہاں تجارتی و مالی خسارہ بڑھا ہے وہیں ملک کے زر مبادلہ کے زخائر میں بھی خاطر خواہ کمی آئی ہے۔
مزید یہ بھی پڑھیں؛
سعودی عرب میں جسمانی طور پر ساتھ جُڑے دو عراقی بچوں کا کامیاب آپریشن
سندھ حکومت نے بلدیاتی الیکشن ملتوی کرنے کیلئے الیکشن کشمنر کو خط لکھ دیا
برلن میں پاکستانی مشن کا 33 گاڑیاں خریدنے کا انکشاف
بینکوں کا پٹرولیم مصنوعات کی درآمدات کے سلسلے میں لیٹر آف کریڈٹ دینے سے انکار
اچھوتے آئیڈیے کی مدد سے ایک بے قیمت کچرے کو لگڑری آرٹ کے نمونے میں بدلنے کا فن
2022 میں سوشل میڈیا ایپ کی مقبولیت میں غیرمعمولی اضافہ
اغوا برائے تاوان کے الزام میں سی ٹی ڈی افسر کا ڈرائیور گرفتار
معاشی غیریقینی کے باوجود:انڈس موٹرز نے گاڑیوں کی قیمتوں میں 12 لاکھ تک اضافہ کردیا
یاد رہے کہ اس سے قبل وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ ’ہم روز سنتے ہیں پاکستان ڈیفالٹ ہو جائے گا؟ کیسے ہو جائے گا؟ آپ لوگ سرمایہ کاری کریں، نام نہاد مفکروں کی باتوں پر دھیان نہ دیں۔‘ ان کا کہنا ہے کہ ’کچھ لوگ اپنی سیاست کے لیے ملک کا نقصان کر رہے ہیں تاہم سیاسی مقاصد کے لیے ملک کے ڈیفالٹ ہونے کی باتیں نہ پھیلائی جائیں۔‘