سرکاری گندم سیکنڈل میں چیف جسٹس نے کہا کہ پیسے دو یا جیل جاو

سندھ ہائیکورٹ میں سرکاری گندم سیکنڈل کیس کی سماعت ہوئی جس کے دوران چیف جسٹس نے کہا کہ ملزمان پیسے دیں یا جیل جانے کے لئے تیار ہو جائیں ، فلوز ملز کے مالک کو ہائیکورٹ کے باہر سے نیب نے گرفتار کر لیا

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سندھ میں سرکاری گندم سیکنڈل کی ہائیکورٹ میں سماعت ہوئی، دوران سماعت چیف جسٹس نے کہا کہ میرے صوبے کے لوگ بھوک سے مررہے ہیں،کسے پتا ہےتھرمیں روزکتنے بچے بھوک سے مرتے ہیں؟کون تھا وزیر جس نے 180 دن کی پالیسی مرتب کی؟ جس پر نیب نے کہا کہ پپلز پارٹی کے رہنما نثار کھوڑو نے 180 روز کی پالیسی کے بعد گندم ادھار پر دی تھی. فلورملز والوں نے حکومت سے گندم لے کر غائب کردی اوروعدے کے باوجود فلور ملز والوں نے گندم کی رقم نہیں دی، جس پر ملزمان کے وکیل نے کہا کہ نیب گندم کی قیمت سے کہیں زیادہ مارک اپ مانگ رہا ہے، خیرپور،رانی پوراورسچل فلورملزنےمحکمہ خوراک سےادھارپرگندم لی تھی، جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ ملزمان پیسے دیں یا جیل جانے کے لئے تیار ہو جائیں، سندھ ہائیکورٹ میں نیب سکھر نے کارروائی کرتے ہوئے فلورملزمالک ہریش کمارکو ہائیکورٹ کے باہر سے گرفتار کرلیا،ہریش کمارکےخلاف سرکاری گندم اسکینڈل کی دوانکوائریز چل رہی ہیں ،دونوں انکوائریزمیں ہریش کمار نے عبوری ضمانت لے رکھی ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.