کراچی، بارشوں سے تباہی پر وزیر اعلیٰ سندھ مستعفی ہوں، شہریوں‌ کی باغی ٹی وی سے گفتگو

کراچی میں شدید بارشوں کی وجہ سے پچاس فیصد شہر پانی میں ڈوبا ہوا ہے، کرنٹ لگنے سے دو درجن سے زائد اموات ہو چکی ہیں، پانی لوگوں کے گھروں‌میں داخل ہو چکا ہے، بجلی کا شارٹ فال ہے لیکن وزیر اعلیٰ‌ سندھ اور ان کی حکومت موجودہ حالات کو کنٹرول کرنے میں بری طرح ناکام نظر آتے ہیں،

کراچی، بارشوں سے وبائی امراض‌ پھوٹنے کا اندیشہ، پاک فوج ، بحریہ کے جوان امدادی کاروائیوں میں مصروف

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق شہریوں نے ٹیلیفون کر کے کراچی کی موجودہ صورتحال پر سخت ناراضگی کا اظہار کیا اور کہا ہے کہ سندھ حکومت ہر سال 110 بلین ریونیو اکٹھا کرتی ہے لیکن حالت یہ ہے کہ دو بارشوں نے کراچی میں نظام زندگی درہم برہم کر دیا ہے اور کوئی لوگوں‌کا پرسان حال نہیں ہے، شہریوں نے باغی دفتر ٹیلیفون کر کے مطالبہ کیا کہ وزیر اعلیٰ‌ سندھ کو فوری طور پر مستعفی ہونا چاہیے. پیپلز پارٹی کی حکومت بری طرح ناکام ہو چکی ہے،

شدید بارشوں سے نصف کراچی پانی میں ڈوب گیا، میئر کراچی کا شہر کو آفت زدہ قرار دینے کا مطالبہ

کراچی میں شدید بارشوں اور ہر طرف پانی کی وجہ سے بیماریاں پھوٹنے کا اندیشہ ہے، اس صورتحال کو دیکھتے ہوئے محکمہ صحت نے اس حوالہ سے وارننگ جاری کی ہے اور کہا ہے کہ بارشوں کے سبب پانی کھڑا ہونے سے ڈینگی، گیسٹرو اور اسہال سمیت متعدد بیماریاں علاقوں کو اپنی لپیٹ میں لے سکتی ہیں اس لئے شہریوں‌ کو خاص طور پر احتیاط کرنی چاہیے،

ادھر کراچی میں شدید بارشوں‌ سے متاثرہ علاقوں میں پاک فوج، بحریہ کے جوان امدادی کاروائیوں میں مصروف ہیں اور پانی میں پھنسے ہوئے لوگوں کی مدد کی جارہی ہے، کراچی میں شدید بارشوں کے سبب ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے، پانی لوگوں کے گھروں‌میں‌داخل ہو چکا ہے اور شہریوں‌ کو سخت مشکل پیش آرہی ہے، کرنٹ لگنے کے واقعات سے متعدد اموات بھی ہوئی ہیں، واضح رہے کہ کراچی کی اس صورتحال کے پیش نظر میئر کراچی وسیم اختر نے شہر کو آفت زدہ قرار دینے کا مطالبہ کیا ہے،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.