ورلڈ ہیڈر ایڈ

امریکہ مشرق وسطیٰ میں مزید فوج تعینات کرنے سے باز رہے . روس اور چین کا انتباہ

امریکہ مشرق وسطیٰ میں مزید فوج تعینات کرنے سے باز رہے . روس اور چین کا انتباہ تازرہ ترین اطلات کے مطابق روس اور چین نے امریکہ کی جانب سے مشرق وسطیٰ میں مزید ایک ہزار فوجیوں کی تعیناتی پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس سے خطے میں جاری کشیدگی میں مزید اضافہ ہوگا۔ پیر کو امریکہ نے خلیج عمان میں تیل کے ٹینکروں پر حملے کے بعد مزید ایک ہزار فوجی مشرق وسطیٰ بھیجنے کا اعلان کیا تھا۔ امریکہ کے قائم مقام سیکرٹری دفاع پیٹرک شیناہن نے کہا تھا کہ شرق الاوسط میں فوج کو دفاع کی غرض سے بھیجا جارہا ہے۔

چینی وزیر خارجہ وانگ یی نے تمام فریقین کو خبردارکرتے ہوئے کہا کہ ’ ایسے اقدامات سے گریز کیا جائے جن سے خطے کی کشیدگی میں مزید اضافہ ہو. امریکہ پر زور دیا کہ وہ ’شدید دباؤ‘ ڈالنے کے عمل کو تبدیل کرے اور ساتھ میں تہران کو کہا کہ جوہری پروگرام کا معاہدہ آسانی سے نہ چھوڑے۔ادھر امریکہ کے پرانے حریف روس کے ڈپٹی وزیر خارجہ نے منگل کو کہا کہ امریکہ کی جانب سے مشرق وسطیٰ میں فوج کی تعداد میں اضافہ کرنا خطے میں کسی بڑے حادثے کا پیش خیمہ ہو سکتا ہے۔ڈپٹی وزیر خارجہ نےصحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ گذشتہ مہینے امریکہ کے وزیر خارجہ نے روس کے دورے کے موقع پر کہا تھا، امریکہ کی فوج جنگ کے لیے نہیں بلکہ اس سے بچنے کے لیے تعینات کی گئی ہے۔امریکی محکمہ دفاع نے گذشتہ ہفتے خلیج عمان میں تیل کے ٹینکروں پر حملوں کی تصاویر اور ویڈیو جاری کی ہیں۔ امریکی محکمہ دفاع پینٹاگان کے مطابق ایران ان بحری جہازوں میں سے ایک پر حملہ کرنے میں ملوث ہے۔

پینٹاگان کا کہنا ہے کہ ایرانیوں نے جاپان کے تیل بردار بحری جہاز کوکوکا کریجئیس سے نہ پھٹنے والی بارودی سرنگ ہٹائے ہیں۔ ایران کی جانب سے اس حوالے سے فی الحال کچھ نہیں کہا گیا ہے کہ کیوں مبینہ طور پر یہ بارودی سرنگیں ہٹائی گئی حالانکہ امریکی فوج اس علاقے میں تھی۔امریکی محکمہ دفاع کی جانب سے جاری کی گئی مزید تصویروں میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک بحری جہاز پر بارودی سرنگیں پھٹی ہیں۔تہران نے ان بحری جہازوں پر حملوں کی تردید کی ہے اور اشارہ کیا کہ واشنگٹن نے ایران پر دباؤ ڈالنے لیے یہ حملے خود کیے ہیں۔دوسری جانب تیل بردار بحری جہاز کوکوکا کریجئیس کے سربراہ نے جمعہ کو کہا کہ عملے نے جہاز پر دوسرے حملے سے پہلے ایک ’اڑتی چیز‘ دیکھی تھی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.