چین میں بچوں کو اسمارٹ فونز کے سخت قوانین کے نفاذ کا فیصلہ

3 سال سے کم عمر بچوں کے لیے لوریوں پر مبنی مواد تیار کیا جائے
0
21

چین میں بچوں کو اسمارٹ فونز پر بہت زیادہ وقت گزارنے سے روکنے کے لیے سخت قوانین کے نفاذ کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

باغی ٹی وی: چین کی سائبرسیکیوریٹی ایڈمنسٹریشن ("CAC”) اور چھ دیگر ایجنسیوں نے مشترکہ طور پر جنریٹو آرٹیفیشل انٹیلی جنس سروسز ("جنریٹو AI اقدامات” یا "قواعد”) کی انتظامیہ کے لیے عبوری اقدامات کا اعلان کیا،جو تخلیقی مصنوعی ذہانت کی ترقی اور فراہمی کو منظم کریں گے۔ "جنریٹو AI”) چین میں گھریلو عوام کے لیے خدمات۔ نئے قواعد 15 اگست 2023 سے لاگو ہوں گے-

سائبر اسپیس ایڈمنسٹریشن آف چائنا کی جانب سے نئے ضوابط کی جاری تفصیلات کا مقصد بچوں کو موبائل فون کی لت سے بچانا ہے اداے کی جانب سے ویب سائٹ پر ان ضوابط کا مسودہ جاری کیا گیا ہے، جس کے مطابق بچوں کو رات 10 بجے سے صبح 6 بجے تک موبائل ڈیوائسز پر انٹرنیٹ تک رسائی کی اجازت نہیں ہوگی 16 سے 18 سال کی عمر کے بچوں کو زیادہ سے زیادہ 2 گھنٹوں تک موبائل فون استعمال کرنے کی اجازت ہوگی۔

جولائی 2023 انسانی تاریخ کا گرم ترین مہینہ

اس سے قبل 2021 میں بھی چینی حکومت نے بچوں کے لیے آن لائن گیمز کا دورانیہ محدود کیا تھااس وقت گیمنگ پلیٹ فارمز کو کہا گیا تھا کہ 18 سال سے کم عمر بچوں کو پورے ہفتے میں صرف 3 گھنٹے آن لائن گیمز کھیلنے کی اجازت ہوگی اب نئے ضوابط میں کہا گیا ہے کہ ٹیکنالوجی کمپنیاں قوانین کے نفاذ کی ذمہ دار ہوں گی، تاہم یہ واضح نہیں کیا گیا کہ خلاف ورزی پر کیا سزا دی جا سکتی ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ پر ایک اور فرد جرم عائد

ادارے کی جانب سے کمپنیوں کو کہا گیا ہے کہ 3 سال سے کم عمر بچوں کے لیے لوریوں پر مبنی مواد تیار کیا جائے جبکہ 12 سال سے کم عمر بچوں کے لیے تعلیمی خبروں اور تفریح پر مبنی مواد کو ترجیح دی جائے بچوں کے تحفظ کے لیے گزشتہ برسوں میں کافی اقدامات کیے گئے اور اب ہم ان کی عمر کے لیے موزوں مواد سے بھرپور انٹرنیٹ ماڈل تیار کر رہے ہیں انٹرنیٹ استعمال کرنے کا دورانیہ مختصر کرنے سے بچوں پر مثبت اثرات مرتب ہوتے ہیں۔

امریکا کا باجوڑ حملےکی شدید مذمت

Leave a reply