fbpx

چین پھر سے عالمی ادارہ صحت کے سامنے ڈٹ گیا

چین پھر سے عالمی ادارہ صحت کے سامنے ڈٹ گیا

باغی ٹی وی رپورٹ :چین نے پھر ڈبلیو ایچ او کے اہلکا روں کو کورونا وائرس کی جانچ اور تحقیق کرنے کے لیے روک دیا ہے . عالمی ادارہ صحت کی ٹیم کے دو ممبروں کے داخلے سے انکار کردیا۔اہلکار ووہان شہر میں نمونوں کی جانچ کے لیے آنا چاہتے تھے.

خون پر مبنی سیرولوجی ٹیسٹوں میں اینٹی باڈیز کے لئے مثبت ٹیسٹ لینے کے بعد چینی عہدیداروں نے ڈبلیو ایچ او کے عہداروں کو ووہان سٹی میں جانے سے روک دیا ہے.

چینی وزارت خارجہ کے ترجمان ژاؤ لیجیان سے جب اس رپورٹ کے بارے میں پوچھا گیا تو انہوں نے باقاعدگی سے نیوز بریفنگ میں بتایا ، "وبائی امراض سے متعلق کنٹرول کی ضروریات کو سختی سے نافذ کیا جائے گا۔

دنیا بھر میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 9 کروڑ 28 لاکھ 48 ہزار 561 تک جا پہنچی ہے جبکہ اس موذی وائرس سے اموات 19 لاکھ 88 ہزار 483 ہو گئیں۔

کورونا وائرس کے دنیا بھر میں 2 کروڑ 44 لاکھ 54 ہزار 530 مریض اسپتالوں، قرنطینہ مراکز میں زیرِ علاج اور گھروں میں آئسولیشن میں ہیں، جن میں سے 1 لاکھ 12 ہزار 166 کی حالت تشویش ناک ہے جبکہ 6 کروڑ 64 لاکھ 5 ہزار 548 کورونا مریض صحت یاب ہو چکے ہیں۔

کورونا وائرس کے کیسز اور اس سے اموات کے اعتبار سے 10 سرِ فہرست ممالک میں 33 کروڑ سے زائد آبادی کا حامل امریکا پہلے نمبر پر ہے جہاں اس وائرس سے اب تک 3 لاکھ 93 ہزار 928 افراد موت کے منہ میں پہنچ چکے ہیں جبکہ اس سے بیمار ہونے والوں کی مجموعی تعداد 2 کروڑ 23 لاکھ 16 ہزار 345 ہو چکی ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.