fbpx

چڑیا اور فاختہ کا گوشت اسمگل کرنے والے ملزم کو 5 سال قید کی سزا

کراچی کی مقامی عدالت نے سندھ سے پنجاب چڑیا اور فاختہ کا ساڑھے تین من سے زائد گوشت اسمگل کرنے والے ملزم کو 5 سال قید کی سزا سنا دی۔

باغی ٹی وی : کنزویٹر سندھ وائلڈ لائف کے عہدیدارکے مطابق وائلڈ لائف ایکٹ 2020 کے تحت مقامی عدالت نے ذبح شدہ فاختہ اورچڑیا کا ساڑھے تین من سے زائد گوشت سندھ سے پنجاب اسمگل کرنے والے ملزم کو دومختلف دفعات کے تحت سزائیں اورجرمانے سنائے دیئے ملزم پر عوامی ایکسپریس ٹرین کے ذریعے 155 کلوگرام ذبح شدہ پرندوں کے گوشت اسمگل کرنے کا الزام تھا، پرندوں میں چڑیا، فاختہ و دیگر پرندوں کا بھاری مقدار میں گوشت شامل تھا۔

تحریک انصاف اور ق لیگ کے درمیان سیٹ ایڈجسٹمنٹ کا معاملہ ڈیڈ لاک کا شکار

وائلڈ لائف کے عہدیدار نے بتایا کہ معزز عدالت نے ملزم عثمان عرف میر جان کو سندھ وائلڈ لائف پروٹیکشن ایکٹ سیکشن 9(1) کی خلاف ورزی ثابت ہونے پر5 سال سزا اور جرمانہ عائد کردیا جبکہ سکیشن 21(1)کی خلاف ورزی ثابت ہونے پر 3 سال سزا اور 5 لاکھ جرمانہ عائد کیا۔

انہوں نے بتایا کہ چند روز قبل پنوں عاقل کے علاقے میں کورائی کینال پر انڈس ڈولفن کو مارنے والے ملزمان کو ایکٹ کے تحت عدالت نے پانچ سال قید اورڈھائی لاکھ روپے جرمانےکی سزائیں سنائیں-

انہوں نے کہا کہ ماضی میں محکمہ جنگلی حیات کےقوانین میں کچھ تکنیکی پیچیدگیوں اور نرمیوں کا فائدہ کسی نہ کسی صورت جنگلی حیات کی اسمگلنگ میں ملوث افراد اورمافیازمل جاتا تھا تاہم سندھ وائلڈ ایکٹ 2020کے نفاذ کے بعد ثمرات ملنا شروع ہوگئےجس کے تحت ملزمان کو عدالتوں سے سزائیں بھی ہوئیں۔

سیلاب زدہ پاکستان کی عالمی مدد کم ہو رہی لیکن سیلابی پانی کم نہیں ہوا:وزیراعظم کا مضمون