سول ملٹری تعلقات کی آئین کے مطابق دوبارہ وضاحت کرنا ہوگی، شاہد خاقان عباسی

سول ملٹری تعلقات کی آئین کے مطابق دوبارہ وضاحت کرنا ہوگی
باغی ٹی و ی : مسلم لیگ (ن) کے سینئر نائب صدر شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ سول ملٹری تعلقات کی آئین کے مطابق دوبارہ وضاحت کرنا ہوگی۔ ملک آئین کے مطابق چلنا چاہیے۔

یہ بات انہوں نے دنیا نیوز کے پروگرام ‘’دنیا کامران خان کیساتھ’’ میں گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ ان کا کہنا تھا کہ ہمارا بیانیہ ہے ووٹ کی امانت میں خیانت نہ ہو۔ پہلے روز سے ہی الیکشن 2018ء کو متنازعہ اور دھاندلی زدہ کہا تھا۔شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ اعتراف کرنا ہوگا کہ ہائبرڈ نظام کی ناکامی کی بنیادی وجہ دھاندلی تھی۔ جمہوری اور سیاسی عمل چلانے کیلئے اسمبلیوں میں شامل ہوئے۔ کوشش کی نظام چل سکے لیکن پارلیمان کو چلنے نہیں دیا جا رہا۔

اپوزیشن سے خطرہ نہیں، فوج جمہوری حکومت کے ساتھ ہے،پاکستان مخالف بیانیے کوبے نقاب ہونا چاہیے، وزیراعظم


سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ بات یہاں تک نہیں پہنچنی تھی لیکن ہر شخص یہی باتیں کر رہا ہے۔ آج ملک کا سب سے بڑا مسئلہ مہنگائی ہے۔ حقائق سب جانتے ہیں، ملکی ترقی اور مہنگائی کی بات کریں۔ان کا کہنا تھا کہ اگر ملک ترقی کرتا تو آج کوئی بھی دھاندلی کی بات نہ کرتا۔ جیلوں میں ڈالنے سے ملکی مسائل حل نہیں ہوں گے۔

واضح رہے کہ وزیراعظم نے کچھ دیر پہلے کہا کہ قوم اداروں کےساتھ کھڑی ہے، سول ملٹری تعلقات میں کوئی تناؤنہیں، فوج آئینی حدودمیں رہتےہوئےجمہوری حکومت کےساتھ ہے۔وزیراعظم نے واضح کیا کہ اپوزیشن کی تحریک سےکوئی خطرہ نہیں، اپوزیشن کوفوج سےاس لئےمسئلہ ہےکہ وہ ان کی کرپشن پکڑتی ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.