کریمنل لا ترمیمی ایکٹ 2022 کو قرآن و سنت کے منافی قرار دیا جائے. درخواست گزار

اسلام میں خودکشی کو حرام قرار دیا گیا ہے
0
46

وفاقی شرعی عدالت نے خودکشی کو جرم قرار دینے کی دفعہ حذف کرنے کے خلاف درخواست کو قابل سماعت قرار دیتے ہوئے فریقین کو نوٹسز جاری کر دیے جبکہ وفاقی شرعی عدالت نے درخواست پر وفاق کو بذریعہ صدر، وزیراعظم اور وزارت قانون کو نوٹس جاری کیے۔

جبکہ وکیل حماد سعید ڈار نے دفعہ 325 حذف کرنے کے خلاف درخواست دائر کرتے ہوئے عدالت سے استدعا کی تھی کہ کریمنل لا ترمیمی ایکٹ 2022 کو قرآن و سنت کے منافی قرار دیا جائے۔
مزید یہ بھی پڑھیں؛
امریکی ڈالر کی قدر میں کمی کا سلسلہ جاری
ہیروئن، احرام میں جذب کرکے اسمگل کرنے کی کوشش ناکام

درخواست میں کہا گیا کہ اسلام میں خودکشی کو حرام قرار دیا گیا ہے، ترمیمی ایکٹ سے پہلے پاکستان کے قانون میں خودکشی کرنا جرم تھا اور درخواست کے مطابق زندگی صرف ایک تحفہ ہی نہیں بلکہ اللہ تعالیٰ کی امانت بھی ہے، خودکشی کو بطور جرم حذف کرنا اسلام اور اسلامی تعلیمات کے خلاف ہے۔

Leave a reply