وزیر اعلی کے پی اسلحہ اور شراب برآمدگی کیس،پراسیکیوشن کی جج تبدیلی کی درخواست منظور

0
51
gandapur

وزیرِ اعلیٰ خیبر پختونخوا علی امین گنڈاپور کے خلاف جاری اسلحہ اور شراب برآمدگی کیس میں ایک اہم پیش رفت ہوئی ہے۔ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ اسلام آباد نے پراسیکیوشن کی جانب سے جج تبدیلی کی درخواست منظور کر لی ہے۔ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج شاہ رخ ارجمند نے سماعت کے بعد فیصلہ سناتے ہوئے کیس کو جوڈیشل مجسٹریٹ شائستہ کنڈی کی عدالت میں منتقل کر دیا۔ یہ فیصلہ پراسیکیوشن کی اس دلیل پر آیا کہ علی امین گنڈاپور مسلسل استثنیٰ کی درخواستیں دائر کر رہے ہیں اور عدالت میں حاضری سے گریز کر رہے ہیں۔دوسری جانب، وزیر اعلیٰ کے وکیل راجہ ظہور نے اس فیصلے پر اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ یہ محض کیس میں تاخیر کا حربہ ہے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ 2016 سے 2024 تک پراسیکیوشن ٹرائل مکمل نہیں کروا سکی اور ان کے مؤکل کے خلاف کوئی ٹھوس ثبوت نہیں ملا۔
یہ کیس 2016 سے زیر سماعت ہے اور اب اپنے آخری مراحل میں داخل ہو چکا تھا۔ تاہم، جج کی تبدیلی سے اب کیس کی کارروائی نئے سرے سے شروع ہونے کا امکان ہے۔اس فیصلے نے سیاسی حلقوں میں ہلچل مچا دی ہے۔ حکومتی حلقوں کا کہنا ہے کہ یہ قانون کے مطابق ایک معمول کا فیصلہ ہے، جبکہ مخالفین اسے سیاسی انتقام قرار دے رہے ہیں۔کیس کی اگلی سماعت میں مزید پیش رفت کا امکان ہے، جہاں نئے جج کے سامنے دلائل پیش کیے جائیں گے۔ اس دوران، سیاسی مبصرین اس بات پر نظر رکھے ہوئے ہیں کہ یہ کیس خیبر پختونخوا کی سیاست پر کیا اثرات مرتب کرے گا

Leave a reply