fbpx

کوئلے کے زہریلے دھوئیں سے شامی ماں اور 3 بچیاں جاں بحق

بیروت: سردی میں کوئلہ جلاکر سونے والی شامی ماں اور 3 بچیاں دم گھٹنے سے جاں بحق ہو گئیں-

باغی ٹی وی : عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق لبنان کے ایک گھر سے شامی پناہ گزین ماں اور ان کے تین بچوں کی لاشیں ملی ہیں جو جما دینے والی سردی سے بچنے کے لیے کوئلہ جلا کر سوئے تھے۔

رانگ نمبریا پھرانٹرنیٹ کے فیوض وبرکات:2 بہنوں کا قتل، ملزم کی نشاندہی پر ایک کے شوہر کی لاش بھی…

رسالہ ہیلتھ ایمبولینس ایسوسی ایشن کے ایک اہلکار یوسف الدور نے بتایا کہ ایک گھر سے ماں اور تین بچوں کی لاشیں ملی ہیں لاشوں کو اسپتال منتقل کیا گیا ہے جہاں چاروں کی موت دم گھٹنے کے باعث ہونے کی تصدیق ہوئی ہے۔

کراچی میں دوسری شادی کی خواہش نے نوجوان کی جان لے لی

پولیس نے میڈیا کو بتایا کہ جنوبی لبنان گاؤں خریاب کے ایک گھر میں ماں نے اپنے تین بچوں کو ٹھنڈ سے بچانے کے لیے کوئلے جلائے جو رات بھر جلتے رہے اور اس میں سے نکلنے والے زہریلے دھوئیں سے چاروں کی موت واقع ہوگئی۔

لاہور: درندہ صفت باپ کی بیٹی سے زیادتی

واضح رہے کہ لبنان میں 15 لاکھ شامی پناہ گزین رہتے ہیں جو شام میں جاری خانہ جنگی کے باعث اپنے گھر بار اور ملازمتیں چھوڑنے پر مجبور ہوئے تھے تاہم لبنان میں بھی ان کی حالت نہایت ابتر ہے۔

خوشاب:پنجاب پولیس نے 42 گھنٹوں کے اندرکمسن اغوا بچے کوبازیاب کروا لیا

شامی پناہ گزین یا شامی مہاجرین ان شامی شہریوں کو کہا جاتا ہے جو شامی خانہ جنگی کے باعث ملک چھوڑ کر دنیا کے مختلف حصوں میں چلے گئے۔ مختلف تنظیموں کی کارروائیوں کی وجہ سے شام بہت متاثر ہوا اور امن کی تلاش میں چار ملین سے زائد شامی شہریوں نے ملک چھوڑ کے دیگر ممالک میں پناہ لی ہے-

13 سالہ گھریلو ملازمہ سے گھناؤنا کام کرنیوالا گرفتار

ان ممالک میں ترکی،لبنان اور اردن میں سب سے زیادہ شامی پناہ گزین موجود ہیں فروری 2015 کے مطابق ترکی میں 2 ملین سے بھی زائد شامی مہا جرین موجود ہیں اور ترکی نے 6 ارب ڈالر سے بھی زائد رقم ان متاثرین پر خرچ کی ہے یوں ترکی دنیا کا وہ پہلا ملک ہے جہاں اس وقت سب سے زائد متاثرین موجود ہیں۔

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!