کرونا بحران .پائلٹ بے روزگاری کے باعث بسیں چلانے پر مجبور

کرونا بحران .پائلٹ بے روزگاری کے باعث بسیں چلانے پر مجبور

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق کوروناوائرس،لاک ڈاؤن کی وجہ سے ٹریویل انڈسٹری میں بحران دیکھنے میں آیا ہے

فضائی سفرکی جزوی بندش سے پائلٹ مشکلات کا شکار ہیں،آسٹریلوی میڈیا کے مطابق آسٹریلیا میں 13 پائلٹ بسیں چلانے لگے ،آسٹریلوی ایئرلائن نے طویل سفرکے جہاز کیلیفورنیا میں اسٹورکررکھے ہیں ،آسٹریلیا میں طویل سفرکی پروازیں غیرمعینہ مدت کے لیے معطل ہیں ،ایئرلائن نے زیادہ ترپائلٹ کو بغیرتنخواہ کے طویل چھٹی دے رکھی ہے ،

قنطاس ’ایئربس اے 380 طیارے کے پائلٹس نے بے روزگاری کی وجہ سے بسوں کے سٹرینگ سنبھال لئے ہیں،اب وہ جہاز کی جگہ بس چلاتے ہیں،

سمپل فلائنگ نامی ویب سائٹ کے مطابق کرونا وائرس بیماری ہوا بازی کی صنعت کے لئے تباہ کن رہا ہے۔ دنیا بھر میں ، ایوی ایشن انڈسٹری میں ملازمتیں ضائع ہوگئیں ، فضائی سفر کی بندش اور کمی کی وجہ سے ایئر لائن کمپنیز نے سخت فیصلے لئے جس کا نقصان پائلٹ کو اٹھانا پڑا.

اگرکوئی پائلٹ جعلی ڈگری پر بھرتی ہوا ہے تو سی اے اے اس کی ذمے دارہے،پلوشہ خان

بین الاقوامی فیڈریشن آف پائلٹس اینڈ ائیرٹریفک کنڑولرز طیارہ حادثہ کے ذمہ داروں کو بچانے میدان میں آ گئی

شہباز گل پالپا پر برس پڑے،کہا جب غلطی پکڑی جاتی ہے تو یونین آ جاتی ہے بچانے

وزیراعظم کا عزم ہے کہ پی آئی اے کی نجکاری نہیں ری سٹکچرنگ کرنی ہے،وفاقی وزیر ہوا بازی

860 پائلٹ میں سے 262 ایسے جنہوں نے خود امتحان ہی نہیں دیا،اب کہتے ہیں معاف کرو، وفاقی وزیر ہوا بازی

کراچی طیارہ حادثہ کی رپورٹ قومی اسمبلی میں پیش، مبشر لقمان کی باتیں 100 فیصد سچ ثابت

طیارہ حادثہ، رپورٹ منظر عام پر آ گئی، وہی ہوا جس کا ڈر تھا، سنئے مبشر لقمان کی زبانی اہم انکشاف

جنید جمشید سمیت 1099 لوگوں کی موت کا ذمہ دار کون؟ مبشر لقمان نے ثبوتوں کے ساتھ بھانڈا پھوڑ دیا

اے ٹی سی کی وائس ریکارڈنگ لیک،مگر کیسے؟ پائلٹ کے خلاف ایف آئی آر کیوں نہیں کاٹی؟ مبشر لقمان نے اٹھائے اہم سوالات

کراچی میں پی آئی اے طیارے کا حادثہ یا دہشت گردی؟ اہم انکشافات

قنطاس ایئر لائن کے 13 پائلٹ کو جب نوکری سے نکالا گیا تو انہوں نے بے روزگاری کے چند ماہ گزارنے کے بعد بس چلانی شروع کر دی ہے،اس حوالہ سے انہوں نے سڈنی بس کمپنی میں ملازمت لی ہے اور بس چلا رہے ہیں،

خبر رساں ادارے کے مطابق 13 میں سے دو پائلٹوں کا انٹرویو لیا گیا۔ پیٹر کیرنس قنطاس ایئربس A380 میں پہلا آفیسر ہے۔

قنطاس ایئر لائن نے اپنے ایئربس اے 380 طیارے کا پورا بیڑا اسٹوریج کے لئے امریکہ روانہ کیا ہے۔ جبکہ دو طیارے ایئر لائن کے لاس اینجلس بحالی اڈے پر موجود ہیں ، باقی دس وکٹورولی ہوائی اڈے پر ہیں۔

اس وقت دنیا بھر کی بیشتر ایئر لائنز اس نوعیت کا کام نہیں کررہی ہیں۔ ابھی پچھلے ہفتے ہی ہائی فلائی نے کہا تھا کہ وہ اپنے واحد A380 کو ختم کردے گی ، جبکہ سنگاپور ایئر لائن نے کہا ہے کہ وہ مزید سات طیاروں کو نہیں چلائے گی

سال 2020 ایوی ایشن انڈسٹری کے لئے بدترین سال،کس ایئر لائن نے مزید پائلٹ کو نکال دیا؟ مبشر لقمان نے بتا دیا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.