fbpx

کورونا وائرس کے بعد ڈینگی وائرس میں بھی جینیاتی تبدیلی کا انکشاف

کورونا وائرس کے بعد ڈینگی وائرس میں بھی جینیاتی تبدیلی کا انکشاف ہوا ہے، ڈینگی وائرس سے متاثرہ مریضوں میں شدید نوعیت کی پیچیدگیاں بھی سامنے آرہی ہیں جس پر ڈاؤیونیورسٹی کے ماہرین مزید تحقیق کر رہے ہیں۔

باغی ٹی وی : ڈاؤیونیورسٹی کے پروفیسر آف پیتھالوجی پروفیسر سعید خان نے بتایا کہ اس سال ڈینگی وائرس میں جینیاتی تبدیلیاں دیکھنے میں آئی ہیں جس کو طبی زبان میں سیرو ٹائپ کہتے ہیں، ڈینگی سیرو ٹائپس، ڈینگی انفیکشن DEN-1 ، DEN-2 ، DEN-3 اور DEN-4 نامی قریبی متعلقہ وائرس کی وجہ سے ہوتا ہے، ان چار وائرسوں کو سیرو ٹائپس کہا جاتا ہے، ایک سیرو ٹائپ میں بھی کچھ جینیاتی تبدیلیاں پائی گئیں ہیں۔

ویکسینیشن کے لئے حکمت عملی سخت کرنے کا فیصلہ

ماہرین کا کہنا ہے کہ ڈینگی وائرس بھی اپنی شکل تبدیل کررہا ہے اور امسال ڈینگی وائرس سے متاثرہ افراد میں شدید پیچیدگیاں بھی سامنے آرہی ہیں، کراچی میں گذشتہ کئی سال سے اسپرے مہم نہ کیے جانے کی وجہ سے وائرس شدت اختیار کررہا ہے۔

دوسری جانب سندھ بھر میں مون سون بارشوں کے بعد مچھروں کی بہتات کے باعث ڈینگی کے کیسز میں اضافہ ہوگیا۔

سندھ میں 24 گھنٹوں کے دوران ڈینگی وائرس کے 28کیس رپورٹ ہوئے جن میں سے 12 کا تعلق کراچی سے ہے جبکہ سندھ بھر میں رواں سال ڈینگی کے 1822 کیس رپورٹ ہوچکے ہیں۔

محکمہ صحت سندھ کے مطابق سندھ میں 24گھنٹوں کے دوران رپورٹ ہونے والے ڈینگی وائرس کے 28 کیسز میں سے 12 کا تعلق کراچی سے ہے رواں سال سندھ میں ماہ ستمبر میں ڈینگی کے457 کیس رپورٹ ہوئے ہیں جن میں سے314 کا تعلق کراچی سے ہے، ستمبر کے مہینے میں کراچی کے ضلع وسطی سے 110، ضلع شرقی سے 70، ضلع جنوب سے 43، ضلع کورنگی سے 35، ضلع غربی سے 30 اور ضلع ملیر سے 26کیس رپورٹ ہوئے۔

رواں سال سندھ میں اب تک ڈینگی کے 1822کیس رپورٹ ہوچکے ہیں جبکہ رواں سال ڈنگی کے باعث 5 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔

پنجاب میں ڈینگی کے مزید 73 کیسز رپورٹ

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!