fbpx

کرونا کی خطرناک قسم کراچی میں تیزی سے پھیلنے لگی، شرح 25 فیصد تک پہنچ گئی

وزیر صحت سندھ ڈاکٹر عذرا پیچوہو نے انکشاف کیا ہے کہ کراچی میں کرونا کی نئی قسم تیزی سے پھیل رہی ہے، جس کی شرح اب پچاس فیصد تک پہنچ گئی ہے۔صوبائی وزیر صحت نے کرونا کی بگڑتی صورت حال کے حوالے سے ویڈیو پیغام جاری کیا جس میں انہوں نے شہریوں کو احتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل کرنے کی درخواست کی۔اپنے ویڈیو بیان میں انہوں نے بتایا کہ ’تحقیق سے اس بات کی تصدیق ہوئی کے کہ کراچی میں سامنے آنے والے کرونا کیسز میں سے پچاس فیصد برطانوی قسم کے ہیں.اُن کا کہنا تھا کہ ’کرونا کی تغیر شدہ (برطانوی) قسم بہت تیزی سے پھیلتی اور یہ زیادہ ہلاکت خیزی دکھاتی ہے، پنجاب اور خیبرپختون خوا میں یہ پہلے ہی پھیل چکی ہے جس کی وجہ سے وہاں کی صورت حال بہت خراب ہوئی ہے.انہوں نے بتایا کہ ’کرونا کی نئی قسم کی وجہ سے پنجاب اور خیبرپختون خوا میں بہت زیادہ اموات ہورہی ہیں اور یومیہ بنیادوں پر بہت سارے لوگ متاثر ہورہے ہیں، اب یہ قسم کراچی بھی پہنچ چکی ہے.صوبائی وزیر صحت نے بتایا کہ ’ہماری تحقیق کے مطابق ٹیسٹ کے نمونوں میں 50 فیصد یوکے کا ویریئنٹ ملا ہے، اس لیے ہمیں بہت احتیاط کرنے کی ضرورت ہے، رمضان کے بعد عیدالفطر بھی آنے والی ہے، افطار اور سحر کے بعد بہت سے لوگ خریداری کے لیے بازاروں کا رخ کریں گے، اگر احتیاط نہ کی تو صورت حال گھمبیر ہوجائے گی.انہوں نے شہریوں سے اپیل کی کہ وہ کرونا ایس او پیز پر سختی سے عمل کریں، ہجوم سے دور رہیں، گھروں سے غیر ضروری طور پر باہر نہ نکلیں، سماجی فاصلے پر لازمی برقرار رکھیں اور ماسک پہنیں جبکہ ہاتھ اور منہ صابن اور پانی سے متواتر دھوتے رہیں .عذرا پیچوہو نے کہا کہ ’شہری احتیاط تدابیر پر عمل کر کے خود کو اور اپنے پیاروں کو کرونا کی نئی قسم سے محفوظ رکھ سکتے ہیں‘۔ اپنے ویڈیو پیغام کے آخر میں اُن کا کہنا تھا کہ ’ہمارے ویکسینیشن سینٹر افطار کے بعد بھی کھلے ہوئے ہیں، جہاں پچاس سال سے بڑی عمر کے لوگ کرونا ویکسین کروا کے خود کو وائرس سے محفوظ رکھ سکتے ہیں‘۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.