قرنطینہ سینٹرز میں صحتیاب افراد کو رپورٹ نہیں دی جارہی، ذمہ داران تاخیری ہربے استعمال کرنے لگے، شکایات

قرنطینہ سینٹرز میں صحتیاب افراد کو رپورٹ نہ دینے کی شکایات، ذمہ داران تاخیری ہربے استعمال کرنے لگے

باغی ٹی وی : حکومت کی جانب سے قائم کیے گئے قرنطینہ سینٹرز میں لوگوں کی شکایات بڑھنے لگیں. ذروائع کے مطابق ایسی اطلاعات آر ہی ہیں کایکسپو سینٹر لاہور میں کے قرنطینہ سینٹر میں مریضوں کو آئسو لیشن کے بعد بھی بے جارکھا جا رہا ہے . وہ مریض جن کا مرض ختم ہو چکا ہے اور ان کی رپورٹ نیگٹو آچکی ہے ان کو بھی فارغ نہیں‌کیا جارہا .

اس طرح پرائمری ہیلتھ سینٹرز کی جانب سے رپورٹ میں بے تاخیر کی جارہی ہے رپورٹ کے انے کا وقت تین دن بتایا جاتا ہے لیکن پھر بھی رپورٹ نہیں‌دی جارہی . اس وجہ سے مریضوں میں بہت زیادہ مایوسی پھیل رہی ہے .لوگ اپنے آپ خود سے چغتائی لیب وغیرہ سے رپورٹ کرار ہے ہیں.وہ رپورٹ دکھانے بعد بھی صحت یاب مریضوں کو فارغ نہیں کیا جا رہا . ایسے ہی جن کو مشتبہ طور پر ادھر سینٹر میں لایا جاتا ہے وہ متاثر ہ مریضوں میں ہی داخل کردیے جاتے ہیں.جن کو کرونا ہونے اور مرض مزید ان لوگوں تک بڑھنے کا خدشہ ہے جو ابھی تک صرف مشتبہ ہیںِ . ذرایع کے مطابق ابھی کل ہی 70 کے قریب مریضوں کے جو کہ صرف مشتبہ تھے ان مریضو کے درمیان لا کر رکھ دیا گیا ہے جو متاثر ہیں یا نیگیٹو ہیں‌ اس صورت حال مزید گھمبیر ہونے کا خدشہ ہے.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.