کرونا وائرس، غلط خبر پھیلانے پر حکمران جماعت کے رکن اسمبلی پر مقدمہ درج، دو اراکین اسمبلی گھروں میں "نظربند”

کرونا وائرس، غلط خبر پھیلانے پر حکمران جماعت کے رکن اسمبلی پر مقدمہ درج، دو اراکین اسمبلی گھروں میں "نظربند”
باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق کرونا وائرس کے حوالہ سے غلط خبر پھیلانے پر حکمران جماعت کے رکن اسمبلی پر مقدمہ درج کر لیا گیا جبکہ دو اراکین اسمبلی کو گھروں سے نکلنے کی اجازت نہیں دی جا رہی.

واقعہ بھارت میں پیش آیا،جہاں بھارت کی حکمران جماعت بی جے پی کے رکن اسمبلی سبھاش سرکار کے خلاف بھارتی پینل کوڈ کی مختلف دفعات کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے، رکن اسمبلی پر الزام ہے کہ انہوں نے کورونا وائرس سے متعلق غلط معلومات فراہم کرکے عوام میں خوف و ہراس پیدا کیا ہے۔

علی پور دوار سے بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ جون برلانے بھارتی وزیر داخلہ امت شاہ کو خط لکھا تھا کہ حکومت بنگال بے انہیں گھر میں قید کردیا ہے۔ دودن قبل وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے سخت وارننگ دیتے ہوئے کہا تھا کہ کورونا وائرس سے متعلق غلط خبریں اور افواہ پھیلانے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ اس کے بعد بانکوڑہ کی ضلعی پولس نے بی جے پی رکن پارلیمنٹ ڈاکٹر سبھاش سرکار کے خلاف مقدمہ درج کیا ہے

بانکوڑہ کی ضلعی پولس نے بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ سبھاش سرکار جو ڈاکٹر بھی ہیں کے خلاف ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایکٹ کے دفعہ 54کے تحت کیس درج کیا۔ اس دفعہ کے تحت غلط خبر یا جھوٹی افواہ جس سے عوام میں خوف و ہراس کا ماحول پیدا ہوجائے تو سزا کا مستحق ہوتا ہے۔ مقدمہ 14 اپریل کو درج کیا گیا ہے.

مقدمہ درج ہونے کے بعد ڈاکٹر سبھاش سرکار کا کہنا تھا کہ ہم نے دو لاشوں کو خفیہ طریقے سے ان کی آخری رسوم کی ادائیگی پر سوال اٹھایا تھا حالانکہ ان دونوں میں کرونا کی تشخیص نہیں ہوئی تھی تو حکومت ایسا کیوں کر رہی ہے، ایسی لاشوں کو خفیہ طریقے سے کیوں دفتایا جا رہا ہے،

دوسری جانب علی پور دوار سے بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ جون برلا کا کہنا ہے کہ وہ عوام میں راشن تقسیم کرنے جا رہے تھے کہ پولیس نے انہیں روکا اور گھر میں بند کر دیا،ایسے میں انہیں گھروں سے نہ نکلنے دینا زیادتی ہے، بی جے پی کے ہی اور ایک رکن پارلیمنٹ ارجن سنگھ کا بھی یہی کہنا ہے کہ پولیس انہیں اپنے حلقے میں عوام کی مدد کے لئے نہیں نکلنے دی رہی، جب بھی باہر جانے کی کوشش کرتے ہیں پولیس روک دیتی ہے، ہمارا قصور کیا ہے.

ترنمول کانگریس کے سینئر رہنما اور ریاستی وزیر خوراک جیوتی پریا ملک کا کہنا ہے بی جے پی کے رہنما کورونا وائرس کے خلاف جنگ میں حکومت کیلئے مشکلات کھڑی کرنے کرنے کی کوشش کررہے ہیں اور مسلسل کورونا وائرس پر سیاسی بیانات دے رہے ہیں.

کرونا لاک ڈاؤن، سائیکل پر ہسپتال جانیوالی خاتون نے سڑک کنارے دیا بچے کو جنم

کوئی بھوکا نہ سوئے مہم ،بھارتی مسلمانوں کا شاندار کام، مسجد سے تقسیم ہوتا ہے کھانا

کرونا لاک ڈاؤن، شادی کی خواہش رہی ادھوری، پولیس نے دولہا کو جیل پہنچا دیا

کرونا لاک ڈاؤن، گھر میں فاقے، ماں نے 5 بچوں کو تالاب میں پھینک دیا،سب کی ہوئی موت

کرونا میں مرد کو ہمبستری سے روکنا گناہ یا ثواب

لاک ڈاؤن ختم کیا جائے، شوہر کے دن رات ہمبستری سے تنگ خاتون کا مطالبہ

لاک ڈاؤن، فاقوں سے تنگ بھارتی شہریوں نے ترنگے کو پاؤں تلے روند ڈالا

کرونا مریض اہم، شادی پھر بھی ہو سکتی ہے، خاتون ڈاکٹر شادی چھوڑ کر ہسپتال پہنچ گئی

کرونا لاک ڈاؤن، رات میں بچوں نے کیا کام شروع کر دیا؟ والدین ہوئے پریشان

لاک ڈاؤن ہے تو کیا ہوا،شادی نہیں رک سکتی، دولہا دلہن نے ماسک پہن کے کر لی شادی

کوئی بھوکا نہ سوئے، مودی کے احمد آباد گجرات کے مندروں میں مسلمانوں نے کیا راشن تقسیم

واضح رہے کہ بھارت میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد اور ہلاک ہونے والوں کی تعداد میں مسلسل اضافے کے تناظر میں وزیر اعظم نریندر مودی نے 21 روزہ لاک ڈاؤن میں توسیع کرتے ہوئے اسے 3 مئی تک بڑھانے کا اعلان کیا ہے۔ مودی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم تمام لوگوں کو 3 مئی تک لاک ڈاؤن میں رہنا ہو گا۔ اس دوران ہمیں اسی طرح نظم و ضبط پر عمل کرنا ہوگا جیسا کہ ہم اب تک کرتے رہے ہیں۔ اگلے ایک ہفتے کے دوران کورونا کے خلاف جنگ میں مزید شدت پیدا کی جائے گی۔ 20اپریل تک ہر قصبے، ہرتھانے، ہر ضلع اور ہر ریاست پر نگاہ رکھی جائے گی کہ وہاں لاک ڈاؤن پر کتنا عمل ہو رہا ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.