کرونا وائرس بے لگام ہوگیا،ہوا،پانی سے بھی پھیلنے لگا،مُردوں کوجلایارہاہے،وائرس زدہ کوزندہ جلانے کی اجازت طلب کرلی،مبشرلقمان

لاہور:کرونا وائرس بے لگام ہوگیا،ہوا،پانی اورتمام ذرائع سے دنیا بھرمیں پھیلنے لگا،مردوں کوجلایارہاہے، متاثرین کوزندہ جلانے کی اجازت طلب کرلی،تمام دنیا نشانہ بن سکتی ہے،مبشرلقمان،تمام دنیا نشانہ بن سکتی ہے،چین میں اس وائرس کے بے لگام ہونے کی خبروں کی نہ صرف تائید کی گئی ہے بلکہ اس کے بارے میں خبرداربھی کردیا گیا ہے ،

 

پاکستان کے معروف صحافی مبشرلقمان نے اپنے معروف یوٹیوب چینل پراس حوالےسے اہم انکشافات کرتے ہوئے چینی ماہرین طب کی ان رپورٹس کو پیش کرکے دنیا بھرکی خیرخواہی کا فریضہ سرانجام دیا ہے،مبشرلقمان کہتے ہیں کہ اس بات کا خدشہ پایا جارہا تھا کہ کہیں یہ وائرس بے لگام نہ ہوجائے اورپوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں نہ لے لے،

مبشرلقمان نے اس حوالے سے اہم گفتگوکرتے ہوئے انکشاف کیا کہ پھروہی ہوا جس کا ڈر تھا ،مبشرلقمان نے انکشاف کرتے ہوئے کہا ہےکہ چینی ماہرین طب کی رپورٹس کے بعد چینی وزارت صحت نے دنیا کو خبردارکردیا ہےکہ کرونا وائرس بے لگام ہوگیا ہے اب یہ وائرس صرف کسی جسم کو چھونے سے نہیں بلکہ یہ ہواکے ذریعے بھی پھیل رہی ہے

مبشرلقمان نے چینی ماہرین طب کی رپورٹس کے متعلق انکشاف کرتے ہوئے کہاکہ یہ بھی وزارت صحت کی طرف سے بتا دیا گیا ہےکہ پانی سے بھی یہ وائرس پھیل رہا ہے ، ان کا کہنا ہےکہ اب یہ وائرس ہواوں کے ذریعے ،پانیوں کے ذریعے اوردیگرذرائع سے بھی پھیل کردنیا کواپنی لپیٹ میں لے لے گا

مبشرلقمان نے نہ صرف یہ رپورٹ پیش کی ہے بلکہ پاکستانیوں کوبھی قبل ازوقت آگاہ کردیا ہے کہ دعا کریں اللہ تعالیٰ اس آزمائش سے بچائے اورہمیں احتیاط کرنی چاہیے

مبشرلقمان نے یہ بھی انکشاف کیا ہےکہ چینی حکام کے حوالے سے معلوم ہوا ہےکہ چینی حکام نے اس وائرس سے مرنےوالوں کوجلانا شروع کردیا ہے ، کیونکہ ماہرین طب کا کہنا ہے کہ جلانے سے ممکن ہے کہ اس وائرس کومرنے والے کے ساتھ ماردیا جائے ،

مبشرلقمان نے یہ بھی انکشاف کیا کہ یہ بھی خبریں آرہی ہیں کہ چینی حکام نے اپنی عدالت عظمیٰ سے درخواست کی ہے کہ ان افراد کو جلاکرمارنے کی اجازت دی جائے جن میں یہ وائرس پا یا جارہا ہے تاکہ باقی لوگ اس وائرس سے محفوظ رہیں

مبشرلقمان نے یہ بھی انکشاف کیا کہ چین میں قائم ایپل اوردیگرکمپنیوں کی سرمایہ کاری میں کمی آئی ہے، جس کی وجہ سے ہزاروں افراد بے روزگارہوسکتے ہیں ، اورپھر یہ بے روزگاری اس ملک کے لیے ایک نئی مصیبت بن کر آرہی ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.