fbpx

یہ آپ کا شہر ہے، کچھ نہیں پتہ؟ کراچی کوکتنا دیکھا ہے ؟ چیف جسٹس

یہ آپ کا شہر ہے، کچھ نہیں پتہ؟ کراچی کوکتنا دیکھا ہے ؟ چیف جسٹس
سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں تجوری ہائٹس سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی

سپریم کورٹ کراچی رجسٹری نے تجوری ہائٹس کو گرانے کا حکم دے دیا سپریم کورٹ نے بلڈر کو ریکارڈ اور دیگر سامان نکالنے کی اجازت دے دی عدالت نے کمشنر کراچی کو تجوری ہائٹس گرانے کے عمل کی نگرانی کا حکم دے دیا سپریم کورٹ کراچی رجسٹری نے ایک ماہ میں اسٹرکچر گرانے کا عمل مکمل کرنے کا حکم دیا ،عدالت نے کہا کہ الاٹیز کو 3 ماہ میں معاوضہ ادا کرکے رپورٹ پیش کی جائے ، سپریم کورٹ نے بلڈر کو ریکارڈ اور دیگر سامان نکالنے کی اجازت دے دی.

سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں ہندو جم خانہ کیس کی سماعت ہوئی ،سپریم کورٹ نے کہا کہ مارکی اور دفاتر کی ہندو جم خانہ میں کوئی گنجائش نہیں ،عدالت نے جم خانہ کی حدود میں قائم مارکی اور عارضی دفاتر فوری ختم کرنے کا حکم دے دیا،عدالت نے کہا کہ مارکی اور دفاتر 2 ماہ میں ختم کی جائیں ،سپریم کورٹ کراچی رجسٹری نے سندھ حکومت کو ناپا منتقلی کیلئے متبادل جگہ دینے کی ہدایت کر دی،سپریم کورٹ نے جناح کلچرل کمپلیکس میں ناپا کے قیام کی تجویز مسترد کردی سپریم کورٹ کراچی رجسٹری نے وکیل کو دورہ کرکے جگہ کا جائزہ لینے کی ہدایت کر دی عدالت نے سندھ حکومت کو ناپا کیلئے پرائم لوکیشن پر جگہ دینے کی ہدایت کردی اکیڈمی کیلئے آڈیٹوریم اور دیگر سہولیات کی فراہمی یقینی بنائی جائے سپریم کورٹ کراچی رجسٹری نے کمشنر کراچی کو ناپا کیلئے نئی جگہ کے تعین کا حکم دے دیا عدالت نے جم خانہ عمارت کی تازہ تصاویر اور مکمل تفصیلات پیش کرنے کا حکم دے دیا

سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں جم خانہ بحالی کیس کی سماعت ہوئی ،چیف جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ قائد اعظم مزار کے ارگرد آثار قدیمہ کا علاقہ ہے، جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ عمارتیں بنانے کے لیے اجازات کون دے رہا ہے ؟ چیف جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ جو تاریخی بلڈنگ گرانا ہو، خستہ قرار دو، گراؤ اور نئی بلڈنگ کھڑی کر دو،سول لائن پر سب پرانے گھر گراتے چلے جا رہے ہیں،دنیا میں آثار قدیمہ کی قدر ہوتی ہے ،لیاقت لائبریری کہاں بنا دی کوئی جاتا ہی نہیں،چیف جسٹس نے کمشنر کراچی سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ آپ کا شہر ہے، کچھ نہیں پتہ؟ کراچی کوکتنا دیکھا ہے ؟ کمشنر کراچی نے عدالت میں کہا کہ کراچی کو 50 فیصد تک دیکھ چکا، چیف جسٹس گلزار احمد نے کمشنر کراچی سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے اصل شہر کی شکل تو دیکھی نہیں آپ کبھی گولی مار، بنارس اورکورنگی گئے ؟ آپ کا تعلق کہاں سے ہے؟ کمشنر کراچی نے عدالت میں کہا کہ میرا تعلق حیدرآباد سے ہے، جس پر چیف جسٹس گلزار احمد نے کہا کہ حیدرآباد کے حالات تو کراچی سے بھی برے ہیں، کراچی میں زیب النسا روڑ پر سب عمارتیں گرا دیں،کسی کے دل میں کوئی درد نہیں ہوا،

نسلہ ٹاور کی 15منزلہ عمارت کے فلور پر پارکنگ ہے نسلہ ٹاور کے11 منزلوں پر 44 فلیٹس ہیں نسلہ ٹاور کے14 فلیٹس کرائے پر تھے جو خالی ہوچکے ہیں نسلہ ٹاور کے دیگر فلیٹس 80 فیصد مکمل خالی ہوچکے نسلہ ٹاور کےکچھ فلیٹس میں رہائشی اور کچھ میں سامان موجود ہے ،رہائشی افراد کا کہنا ہے کہ رقم واپسی کے حوالے سے کوئی یقین دہانی نہیں کرائی گئی ،اتوار تک عمارت کے رہائشیوں کو فلیٹس خالی کرانے کا حکم دیا گیا نسلہ ٹاور کو سیل نہیں کیا گیا ،مرکزی گیٹ اور پارکنگ ایریا بھی کھلا ہے

ٹاور کے حوالے سے سندھ حکومت کو بھیجی گئی رپورٹ منظرعام پرآئی تھی جس میں بتایا گیا تھا کہ 30جولائی 2013کو ایس بی سی اے نے 15منزلہ بلڈنگ پلانگ کی منظوری دی 2013 میں ڈی جی ایس بی سی اے منظور قادر عرف کاکا تھے اہم شخصیات نے نسلہ ٹاورگرانے سے روکنے اور نمائشی کارروائی کیلئے زور دیا رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ مختار کار فیروز آباد نے اضافی رقبہ پلاٹ میں شامل کرنےکی منظوری دی نسلہ ٹاور کا 780گز کا پلاٹ سندھی مسلم سوسائٹی نے 1951 میں الاٹ کیا اور چیف کمشنر کراچی نے1957 میں مذکورہ پلاٹ میں 264 گز اضافے کی منظوری دی رپورٹ کے مطابق 1980 میں شارع فیصل کے دونوں جانب 20 فٹ کارقبہ پلاٹس میں شامل کر دیا ، شاہراہ قائدین فلائی اوور تعمیر کے دوران77فٹ رقبہ پلاٹ میں شامل کیاگیا اور اضافے کے بعد نسلہ ٹاور کا پلاٹ بڑھ کر1121مربع گز ہوگیا۔

پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ مظلوموں کو دیوار سے لگا کر نسلہ ٹاورز کو دوسری لال مسجد نہ بنایا جائے۔ 24 گھنٹے کے اندر نسلہ ٹاورز کے متاثرین کا مسئلہ حل ہو سکتا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ حکومت کے پاس اگر متاثرین کو ادائیگیوں کے لیے پیسے نہیں ہیں تو آباد میں شامل ہزاروں بلڈرز ہیں، شہر کے بڑے بلڈروں سے پول بنا کر پیسے لے لیں اور مارکیٹ ریٹ کے حساب سے رہائشیوں کو ادائیگیاں کر دیں اور اگلے ایس بی سی اے کے چالان میں بلڈروں کی رقم ایڈجسٹ کردیں۔ کراچی کی بدقسمتی ختم ہونے کا نام نہیں لے رہی ہیں، حکومت پاکستان کے جس ریاستی ادارے کو طاقت کا مظاہرہ کرنا ہوتا ہے وہ کراچی کا رخ کر لیتا ہے۔ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ کراچی والے قانون کا احترام کرتے ہیں اس لیے سب کو یہی شہر نظر آتا ہے۔ اگر کسی عمارت کو بم سے اڑانا ہی ہے تو ایس بی سی اے کی عمارت کو اڑائیں جو غیر قانونی تعمیرات کا گڑھ ہے، تاکہ شہر میں غیر قانونی تعمیرات رکیں۔ سندھ حکومت روزانہ کی بنیاد پر سینکڑوں ایکڑ آراضی اپنی جاگیر سمجھ کر تحفے اور سیاسی رشوت کے طور پر دے رہی ہے لیکن اسکے پاس در بدر کیے گئے متاثرین کو متبادل جگہ دینے کے لیے ایک انچ زمین نہیں ہے۔

چیئرمین مہاجرقومی موومنٹ آفاق احمد نے نسلہ ٹاورسمیت غیر قانونی تعمیرات کو مہندم نے کے عدالتی حکم کو ادھورا قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ نسلہ ٹاورسمیت متعددتعمیرات کو غیر قانونی قرار دے کر مہندم کرنے کا فیصلہ قانونی سہی لیکن ادھورا ہے۔ آفاق احمد نے کہا کہ اس طرح کی عمارتوں کی تعمیر میں نہ صرف عوام اور بلڈرکے کروڑوں روپے خرچ ہوتے ہیں بلکہ اسطرح کی عمارتیں کچی آبادیوں یا غیرقانونی گوٹھوں کی طرح رات کے اندھیرے میں اچانک تعمیر نہیں ہوتیں بلکہ انکے مکمل ہونے میں مہینوں نہیں سال تک لگ جاتے ہیں، اور اسطرح کی تعمیرات سے پہلے صوبے اور شہر کے ایک درجن سے زیادہ اداروں سے اپنی زمین اور تعمیرات کی مکمل دستاویزات دکھاکر تعمیرات کر اجازت حاصل کی جاتی ہے،اگر اسطرح کی تعمیرات غیرقانونی ہیں تو اسکی تعمیر کی اجازت دینے والے تمام ادارے جس میں وفاقی ادارا بھی شامل ہے،سب شریک جرم ہیں اس لئے تعمیرات کے انہدام کے ساتھ ساتھ اس جرم میں شریک افسران کو بھی کٹہرے میں لایا جانا چاہیے۔

متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے ڈپٹی کنوینر وپارلیمانی لیڈر سندھ اسمبلی کنور نوید جمیل نے وزیر اعلی سندھ اور چیف سیکریٹری سندھ کو نسلہ ٹاور کے انہدام کے حوالے سے خط تحریر کیا ہے جس میں لکھا ہے کہ نسلہ ٹاورکئی سال قبل تعمیر ہوا تھا جس کو باقاعدہ وہاں کے رہائشیوں نے رقم ادا کر کہ مالکانہ حقوق کی بنیاد پر خریدا تھا اور سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے اس کی منظوری بھی دی تھی جس کے تمام ثبوت انکے پاس موجود ہیں لہذا میں آپ سے مطالبہ کرتا ہوں کہ نسلہ ٹاور کے مکینوں کے نقصان کے ازالے کیلئے اقدامات کیے جائیں اور ان متاثرین کیلئے ہنگامی بنیاد پر متبادل رہائش کا بند و بست کیا جائے کیوں کہ ان متاثرین کا یہ نقصان حکومت سندھ کے ذیلی ادارے کی وجہ سے ہوا تھا اور اس کی ساری ذمہ داری حکومت سندھ کی ہے۔

امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے چیف جسٹس پاکستان گلزار احمد سے نسلہ ٹاور کے رہائشیوں کو معاوضہ دلوانے کی اپیل کر دی۔یہ اپیل امیر جماعتِ اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کراچی میں واقع نسلہ ٹاور کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کی۔انہوں نے کہا کہ ہمیں اس سے کوئی غرض نہیں ہے کہ نسلہ ٹاور غلط بنا ہے۔حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ چیف جسٹس پاکستان گلزار احمد سے درخواست ہے کہ نسلہ ٹاور کے ان رہائشیوں کو معاوضہ دلوائیں

@MumtaazAwan

طیارہ حادثہ، جناح میں 66 میتوں کا پوسٹ مارٹم مکمل،فرانزک ڈی این اے لیب کو کتنے نمونے ہوئے موصول؟

طیارہ حادثہ، وزیراعظم کی ہدایت پر لواحقین کیلئے رقم بڑھا دی گئی

کیا اس کرنل کا بھی کرنل کی بیوی جتنا چرچا ہوگا ؟

طیارہ حادثہ، پاک فوج کی امدادی سرگرمیاں جاری، کتنے گھر ہوئے تباہ،اعدادوشمار جاری

طیارہ حادثہ،پی آئی اے کی 7 رکنی تحقیقاتی ٹیم کا جائے وقوعہ کا دورہ

طیارہ حادثہ ،چئیرمین قائمہ کمیٹی داخلہ سینیٹر رحمان ملک نے انکوائری کیلئے اضافی نکات بھیج دیئے

نئے ڈی جی سول ایوی ایشن اتھارٹی کی تعیناتی کے خلاف درخواست،عدالت نے بڑا حکم دیا

اے ٹی سی کی وائس ریکارڈنگ لیک،مگر کیسے؟ پائلٹ کے خلاف ایف آئی آر کیوں نہیں کاٹی؟ مبشر لقمان نے اٹھائے اہم سوالات

اگرکوئی پائلٹ جعلی ڈگری پر بھرتی ہوا ہے تو سی اے اے اس کی ذمے دارہے،پلوشہ خان

شہباز گل پالپا پر برس پڑے،کہا جب غلطی پکڑی جاتی ہے تو یونین آ جاتی ہے بچانے

پی آئی اے کے ہوٹل روزویلٹ کے مالکانہ حقوق کس کے پاس ہیں؟ اسمبلی میں اہم انکشاف

وزیراعظم کا عزم ہے کہ پی آئی اے کی نجکاری نہیں ری سٹکچرنگ کرنی ہے،وفاقی وزیر ہوا بازی

860 پائلٹ میں سے 262 ایسے جنہوں نے خود امتحان ہی نہیں دیا،اب کہتے ہیں معاف کرو، وفاقی وزیر ہوا بازی

کراچی طیارہ حادثہ کی رپورٹ قومی اسمبلی میں پیش، مبشر لقمان کی باتیں 100 فیصد سچ ثابت

طیارہ حادثہ، رپورٹ منظر عام پر آ گئی، وہی ہوا جس کا ڈر تھا، سنئے مبشر لقمان کی زبانی اہم انکشاف

حکومت نے پائلٹس لائسنس معاملے کو متنازعہ بنا کر پی آئی اے کو "کریش” کردیا۔ شیری رحمان

سول ایوی ایشن انتہائی بد حال محکمہ،جعلی ڈگری پر لوگ نوکری بھی پوری کر گئے، چیف جسٹس برہم

سول ایوی ایشن میں جنسی ہراساں کیس،کاروائی کی بجائے ترقی دے دی گئی

سول ایوی ایشن کی کارکردگی صفر.کیا شادیاں کروانا شروع کر دیں؟ چیف جسٹس پھٹ پڑے

شادی ہال کھولے، نائٹ کلب بھی کھول لیں، سپریم کورٹ سول ایوی ایشن پر برہم،بڑا حکم دے دیا

تجاوزات کو برداشت نہیں کریں گے،چیف جسٹس

جو بھی اسٹرکچر ہے، ہم ڈیٹونیٹر سے گرانے کا حکم دیں گے ،چیف جسٹس

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!