fbpx

این اے75 ڈسکہ:99 پولنگ اسٹیشنز کا رزلٹ آ گیا:پی ٹی آئی کو5155 ووٹ کی برتری

لاہور:این اے75 ڈسکہ:99 پولنگ اسٹیشنز کا رزلٹ آ گیا:پی ٹی آئی کو5155 ووٹ کی برتری،اطلاعات کے مطابق ڈسکہ سے قومی اسمبلی کے ہونے والے آج کے الیکشن کے ابھی تک موصول ہونے والے نتائج کےمطابق پاکستان تحریک انصاف 5155 ووٹ کی برتری کے ساتھ آگے ہے

باغی ٹی وی کے مطابق اس وقت این اے ڈسکہ 75 کے 99 پولنگ اسٹیشنز کے رزلٹ موصول ہوگئے ہیں جن کے مطابق پی ٹی آئی کے امیدوارعلی اسجد ملہی 32518 ووٹ لے کرآگے ہیں جبکہ ن لیک کی نوشین افتخار27363 ووٹ لے کر پیچھے ہیں اوریہ فرق 5155 ووٹ کا بنتا ہے

یہاں 360 پولنگ سٹیشنز قائم کیے گئے تھے۔ حلقے میں ووٹرز کی کل تعداد 4 لاکھ 4 ہزار 3 ہے جن میں سے مرد ووٹرز کی تعداد 2 لاکھ 73 ہزار 6 جبکہ خواتین ووٹرز کی تعداد 2 لاکھ 20 ہزار 997 ہے۔

اس حلقے میں مسلم لیگ ن کی امیدوار سیدہ نوشین افتخار اور پی ٹی آئی کے امیدوار علی اسجد ملہی انتخابی میدان میں اترے تھے۔

حلقہ پی پی 51 کی نشست ن لیگ کے شوکت منظور چیمہ کے انتقال کے باعث خالی ہوئی تھی۔ن لیگ نے ان کی اہلیہ بیگم طلعت محمود کو امیدوار نامزد کیا جبکہ پی ٹی آئی نے چوہدری محمد یوسف کو میدان میں اتارا۔یہ حلقہ وزیر آباد شہر، سوہدرہ اور دیگر دیہاتی علاقوں پرمشتمل ہے۔

یہاں کل ووٹرز کی تعداد 2 لاکھ 53 ہزار 949 ہے جبکہ 162 پولنگ سٹیشن قائم کیے گئے ہیں جن میں سے 8 کو حساس قرار دیا گیا تھا۔ان حلقوں میں بھی مقابلہ کانٹے دار ہے اورآخری اطلاعات کے مطابق پی ٹی آئی کے امیدوار چوہدری محمد یوسف کو برتری حاصل ہے

این اے 45 ضلع کرم کی نشست جے یو آئی ف کے رکن قومی اسمبلی منیر خان اورکزئی کے انتقال کے بعد خالی ہوئی تھی۔

یہاں مجموعی طور پر 27 امیدوار میدان میں ہیں۔ پی ٹی آئی کے فخر زمان بنگش، جے یو آئی کے جمیل خان کے درمیان مقابلہ ہے اوریہاں بھی پی ٹی آئی کے امیدوار کو برتری حاصل ہے

حلقے میں رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد ایک لاکھ 80 ہزار 931 ہے جن میں خواتین ووٹرز کی تعداد 70 ہزار 485 ہے۔ حلقے میں 134 پولنگ سٹیشنز قائم کئے گئے تھے۔

پی کے 63 نوشہرہ میں 102 پولنگ سٹیشن قائم ہیں جن میں 52 مرد اور 39 خواتین اور 3 مشترکہ پولنگ سٹیشن قائم کیے گئے تھے۔ 1 لاکھ 41 ہزار 934 رجسٹرڈ ووٹرز میں 79 ہزار 63 مرد جبکہ 62 ہزار 871 خواتین ووٹرز ہیں۔

یہ نشست سابق تحریک انصاف کے صوبائی وزیر میاں جمشید الدین کاکا خیل کے انتقال کے باعث خالی ہوئی تھی۔

یہاں ن لیگ کے میاں اختیار ولی خان پی ڈی ایم کے مشترکہ امیدوار ہیں جبکہ تحریک انصاف کے میاں عمر کاکا خیل میدان میں ہیں، اس حلقے میں پی ڈی ایم کے مشترکہ امیدوارمیاں عمرکاکا خیل اپنے مخالف امیدوار پرسبقت لے جارہے ہیں‌

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.