تحریک لیبک پاکستان کے قائد مسجد داتا دربار پہنچے تو شرکاءمیں جوش اور ولولہ کی لہر دوڑ گئی

تحریک لیبک پاکستان کے قائد مسجد داتا دربار پہنچ گئے شرکاءمیں جوش اور ولولہ کی لہر دوڑ گئی

باغی ٹی وی رپورٹ کے مطابق ، جامع مسجد داتا دربا گنج بخش رحمۃ اللہ علیہ میں خادم حسین رضوی مرحوم کے رسم قل خوانی میں شرکاء موجود ہیں.حافظ سعد رضوی قائد تحریک لیبک پاکستان پہنچ گئے ھیں. اس کے علاوہ تحریک لبیک کے دیگر قائدین بھی اس موقع پر موجود ہیں. لوگوں میں جوش اور ولولہ پایا جاتا ہے وہاں پر موجود قائدین اور شرکا نے لبیک یا رسول اللہ کے نعرے لگانا شروع کردیے.
1شفیق آمینی عامر کے پی کے
2قاسم فخری ، ایم پی اے سندھ
3قاضی محمود اعوان ، شمالی پنجاب
4غلام عباس فیضی ، امیر لاہور ڈویژن ،
5مفتی عابد عامر لاہور 6علامہ سردار صاحب
7پیر عبدالخالق صاحب ننکانہ صاحب
8حافظ حفیظ صاحب
9محمد احسان رضوی صاحب
10مولانا جمیل احمد شرقپوری
11 مولانا ھاشم حسین رضوی
12 مولانا ظہیر الحسن رھنما TLP
31 مولانا فاروق الحسن
14 صاحبزادہ عبداللہ مصطفیٰ ہزاروی
15 مولانا پیر افضال شاہ
واضح رہے کہ کل علامہ خادم رضوی کی مینار پاکستان میں نماز جنا زہ ہوئی جس میں لاکھوں لوگوں نے شرکت اور یہ لاہور کی تاریخ کا ایک بڑا اور تاریخی جلسہ تھا . نماز جنازہ کی امامت انکے بیٹے مولانا صاحبزادہ حافظ محمد سعد حسین رضوی نے کروائی.

نماز جنازہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے تحریک لبیک کے نومنتخب سربراہ مولانا صاحبزادہ حافظ محمد سعد حسین رضوی کا کہنا تھا کہ ہمارے قائد دنیا فانی سے رحلت فرماگے لیکن انکا مشین ہرصورت جاری رہے گا

تحریک لبیک دھرنا،راستے بند ہونے پر ٹریفک کا متبادل روٹ جاری

شاہد خاقان عباسی نے تحریک لبیک کے دھرنے کو "میلہ” قرار دے دیا

فیض آباد دھرنا،وزیراعظم کا نوٹس،اہم شخصیت کو طلب کر لیا

مذاکرات ہی نہیں ہوئے تو کامیابی کیسی؟ تحریک لبیک کا دھرنا جاری رکھنے کا اعلان

علامہ خادم رضوی کی وفات، فیض آباد معاہدہ پر عمل ہو پائے گا؟

مولانا صاحبزادہ حافظ محمد سعد حسین رضوی نے کارکنان سے حلف لیتے ہوئے کہا ہے کہ ہم اپنے قائد سے عہد وفاکرتے ہوئے اس بات کا عزم کرتے ہیں کہ حرمت ناموس رسالت اور عقیدہ ختم نبوت کے تحفظ کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے اور پاکستان کی تعمیرو ترقی اور نظام مصطفی کے نفاذ کیلئے ہمیشہ جہدوجہد جاری رکھیں گے ، اسلام کیخلاف طاغوتی سازشوں کو ناکام بنانے کیلئے ہمیشہ اپنا کردار ادا کر تے رہیں گے

اس موقع پر تحریک لبیک پاکستان پنجاب کے امیر علامہ پیر سید عنایت الحق شاہ سلطانپوری نے اپنے خطاب میں کہا کہ علامہ خادم حسین رضوی فرمایا کر تے تھے کہ ہم جنا کہ کام کرتے ہیں وہ ہمیں تنہا نہیں چھوڑتے قوم نے یہ منظر لیاقت باغ تافیض آباد بھی دیکھا اور آج نماز جنازہ میں ڈیڑھ کروڑ مسلمانوں نے شرکت کرکے ثابت کردیا کہ جو ناموس رسالت کیلئے کام کرے اللہ تعالی اسے دنیا اور آخرت میں سرخرو فرماتاہے .

تحریک لبیک پاکستان کے نائب امیر علامہ پیر سید ظہیر الحسن شاہ نے اعلان کیا کہ مرکزی مجلس شوری کے فیصلے کے مطابق علامہ خادم حسین رضوی کے بیٹے مولانا صاحبزادہ حافظ محمد سعد حسین رضوی کو تحریک لبیک پاکستان کا مرکزی امیر مقرر کیا گیا ہے اور انہوں نےکہا کہ ہم خون کے آخری قطرہ تک عزت رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے تحفظ اسلام کی بالادستی کیلئے مولانا صاحبزادہ حافظ محمد سعد حسین رضوی کے ساتھ ہیں.

اس موقع پر تحریک لبیک پاکستان کے سربراہ علامہ پیر قاضی محمود احمد قادری اعوانی شیخ الحدیث علامہ پیر سید ضیاء الحق شاہ سلطان پوری ڈاکٹر محمد شفیق آمینی غلام غوث بغدادی علامہ مفتی غلام عباس فیضی ایم پی اے مولانا مفتی محمد قاسم فخری ممتاز حسین قادری کے والد گرامی ملک محمد بشیر اعوان مفتی اعظم پاکستان رویت ہلال کمیٹی چیئرمین علامہ مفتی منیب الرحمن مولانا محمد عبدالستار سعیدی تنظیم المدارس اہلسنت پاکستان کے سیکرٹری جنرل مولانا صاحبزادہ عبدالمصطفی ہزاروی پیر محمد افضل قادری سنی تحریک کے ثروت اعجاز قادری علامہ ثاقب رضا مصطفائی پیراجمل رضا علامہ صاحبزادہ سید حبیب الحق شاہ سلطان پوری علام سید عرفان شاہ مشہدی مولانا ڈکٹر راغب حسین نعیمی پیر میاں محمد حنفی سیفی دعوت اسلامی کے امیر مولانا الیاس قادری کے بیٹے مولانا صاحبزادہ بلال قادری مولانا صاحبزادہ احسان الحق شاہ سلطان پوری جماعت اہلسنت کےپیر عبدالخالق سنی تحریک کے مولانا صاحبزادہ بلال سلیم قادری جماعت اسلامی کےلیاقت بلوچ مفتی قاضی محمد سعید الرحمن قادری مولانا حنیف قریشی مولانا غفران محمود سیالوی صاحبزادہ خالد محمود ضیاء پیر محمد قاسم سیفی ملک بھر سے ہزاروں علماء ومشائخ وکلاء ڈاکٹرز تاجر برادری صحافی برادری اور تمام مذہبی وسیاسی جماعتوں کے آراکین نے شرکت کی
علامہ خادم رضوی کا دو روز قبل انتقال ہوا تھا، انہیں شیخ زید ہسپتال منتقل کیا گیا تھا تا ہم ڈاکٹرز نے انکی موت کی تصدیق کی، جس کے بعد انکے ورثا نے نماز جنازہ کا اعلان کیا تھا

علامہ خادم رضوی کی وفات پر آرمی چیف، وزیراعظم سمیت سیاسی و مذہبی جماعتوں کے سربراہان نے اظہار تعزیت کیا تھا

علامہ خادم رضوی کے نماز جنازہ کا وقت دس بجے مقرر کیا گیا تھا تا ہم جسد خاکی مینار پاکستان گراؤنڈ میں لیٹ پہنچنے کی وجہ سے نماز جنازہ کی لیٹ ادائیگی ہوئی.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.