دہلی تشدد، کی گئی منصوبہ بندی، واٹس ایپ گروپ بنا کر دیئے گئے ٹارگٹ، پتھراؤ، گھر جلانے کی ڈیوٹیاں لگیں

دہلی تشدد، کی گئی منصوبہ بندی، واٹس ایپ گروپ بنا کر دیئے گئے ٹارگٹ، پتھراؤ، گھر جلانے کی ڈیوٹیاں لگیں

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق دہلی میں ہونے والے مسلمانوں پر تشدد سے قبل باقاعدہ اس کی منصوبہ بندی کی گئی، واٹس ایپ پر گروپس بنا کر ٹیمیں تشکیل دی گئیں اور علاقے تقسیم کر کے انہیں ٹارگٹ دیئے گئے

اس بات کا انکشاف تحقیقات میں ہوا، تحقیقاتی ٹیمیں اس حوالہ سے مصروف ہیں کہ فسادات کا ذمہ دار کون ہے، اس دوران انکشاف ہوا کہ یہ سب باقاعدہ منصوبہ بندی کے تحت کیا گیا،حکمران جماعت بی جے پی کے غنڈوں نے واٹس ایپ گروپ بنائے اور اس میں غنڈوں کو شامل کر کے باقاعدہ آن لائن اجلاس کئے گئے اس میں انتہا پسندوں‌کو ٹارگٹ دیئے گئے کہ کس نے پتھراؤ کرنا ہے، کس نے تیزاب پھینکنا ہے، کس نے آگ لگانی ہے

تحقیقاتی ٹیموں نے اس حوالہ سے 50 کے قریب موبائل فون ضبط کئے ہیں جو ان گروپس میں شامل تھے،گروپس میں ہدایات دی جاتی رہیں کہ اب اس علاقے پر حملہ کرنا ہے اور گھروں کو آگ لگانی ہے، یہ بھی انکشاف ہوا کہ ہندو انتہا پسندوں‌نے اس کے لئے باقاعدہ کرائے پر بھی غنڈے منگوائے تھے جنہیں ملازمت کی آفر کا جھانسہ دے کر یہ کام کروایا گیا،

تحقیقاتی ٹمیں ابھی بھی مزید تحقیقات کر رہی ہیں، سوشل میڈیا پر فیس بک اور ٹویٹر آئی ڈیز کی نگرانی کی جا رہی ہے، سی سی ٹی وی فوٹیج میں نظر آنے والوں کو شناخت کرنے کا عمل جاری ہے،

تحقیقاتی ادارے اس لئے تحقیقات کر رہے ہیں کیونکہ فسادات میں بھارتی حساس ادارے آئی بی کا اہلکار افسر انکت شرما بھی ہلاک ہو گیا تھا ، انتہا پسندوں سے اسے بھی تشدد کر کے مارا اور لاش نالے میں پھینک دی تھی جو تیسرے روز ملی،

دہلی میں ہندو انتہا پسندوں کی جانب سے متنازعہ شہریت بل کے خلاف احتجاج کرنے والے مظاہرین پر تشدد کیا گیا، مسلمانوں کے گھر جلائے گئے، مساجد کی بے حرمتی کی گئی اور ایک مسجد کو شہید کیا گیا.مسلمانوں کی املاک کو جلانے اور لوٹنے کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ مساجد اور درگاہوں کی بھی بے حرمتی کی جا رہی ہے، بھجن پورہ میں مزار کو نذر آتش کیا گیا، اشوک نگر میں مسجد کو آگ لگائی گئی اور مینار پر ہنومان کا جھنڈا بھی لہرا دیا گیا۔

گجرات کا "قصائی” مودی دہلی میں مسلمانوں پر حملے کا ذمہ دار ،بھارت کے اندر سے آوازیں اٹھنے لگیں

دہلی میں پولیس بھی ہندوانتہا پسندوں کی ساتھی، زخمی تڑپتے رہے، پولیس نے ایمبولینس نہ آنے دی

دہلی جل رہا تھا ،کیجریوال سو رہا تھا، مودی سن لے،ظلم و تشدد ہمیں نہیں ہٹا سکتا، شاہین باغ سے خواتین کا اعلان

دہلی میں ظلم کی انتہا، درندوں نے 19 سالہ نوجوان کے سر میں ڈرل مشین سے سوراخ کر دیا

دہلی تشدد ، خاموشی پرطلبا نے کیا کیجریوال کے گھر کا گھیراؤ، پولیس تشدد ،طلبا گرفتار

دہلی میں ایک ماہ کیلئے دفعہ 144 نافذ،مسلمانوں‌ کو گھروں سے نہ نکلنے کی ہدایت

مسلمانوں کے قتل عام پر خاموش،گھر کا گھیراؤ ہونے پرکیجریوال نے کی فوج طلب،مودی نے کیا انکار

دہلی میں منصوبے کے ساتھ حملے کئے گئے، سونیا گاندھی کا انکشاف، کہا امت شاہ دے استعفیٰ

دہلی،4 ماہ قبل شادی کرنیوالی شازیہ بیوہ ،مارے جانے کے خوف سے شازیہ برقت اتارنے پر مجبور

سوشل میڈیا پر وائرل اپنی تصویر دیکھنے کی ہمت نہیں،ہندو انتہا پسندوں کے تشدد سے زخمی نوجوان کی گفتگو

ہندو انتہا پسندوں کے تشدد سے 34 افراد جان کی بازی ہار گئے ہیں جبکہ 400 سے زائد زخمی ہیں، پولیس بھی ہندو انتہا پسندوں کا ساتھ دیتی رہی، ہندو انتہا پسند مسلمانوں کے گھروں میں لوٹ مار بھی کرتے رہے اور انہیں تشدد کا نشانہ بھی بناتے رہے، اس دوران صحافیوں پر بھی حملے کئے گئے،

دہلی ، سکول، گاڑیاں ،گھر سب جلا دیئے گئے، تصاویر باغی ٹی وی پر

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.