fbpx

مقبوضہ کشمیرکی ڈیموگرافی میں تبدیلی ناقابل قبول :عمران خان کےبیان کےبعد معاملہ اقوام متحدہ تک جاپہنچا

لاہور:مقبوضہ کشمیر کی ڈیمو گرافی میں تبدیلی ناقابل قبول:عمران خان کے بیان کے بعد معاملہ اقوام متحدہ تک جاپہنچا،اطلاعات کے مطابق بھارت کی طرف سے بڑے عرصے سے جاری کشمیرکی ڈیموگرافی کوبدلنے کے حوالے سے وزیراعظم عمران خان کی طرف سے سخت ردعمل کے بعد معاملہ اقوام متحدہ میں بھی زیربحث آگئی ہے

اس حوالے سے ہہ معلوم ہوا ہے کہ بھارت کو اس بات کا ڈر ہیں کہ کہیں مستقبل میں پاکستان کی طرف سے سخت ردعمل اوراقوام متحدہ کی قراردادوں پرعمل کی صورت میں اس کو کشمیر سے ہاتھ نہ دھونا پڑے وہ ڈیموگرافی میں کئی سالوں سے تبدیلی کررہا ہے

ذرائع کے مطابق اقوام متحدہ نے اپنی رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیر کے آبادی کے تناسب کو تبدیل کرنے میں پچھلے 15 سال سے مصروف ہے۔

رپورٹ کے مطابق بھارت نے ستمبر 2020 تک ایک لاکھ 44 ہزار سے زیادہ ہندوؤں کو کشمیر کا ڈومیسائل دیا اور مقامی 377،683مسلمان کشمیریوں کو ڈومیسائل دینے سے انکار کر دیا۔

اقوام متحدہ کے ماہرین کے مطابق تبدیلیاں کشمیریوں کو مذہبی، ثقافتی اور سیاسی حقوق سے دور لے جائیں گی جس کے نتیجے میں کشمیریوں کی سیاسی نمائندگی میں کمی آئے گی۔

رپورٹ کے مطابق کشمیر وہ واحد ریاست ہے جس میں مسلمانوں کی تعداد بہت زیادہ ہے جب کہ اس کا ایک خاص اسٹیٹس بھی خطرے میں ہے۔

خیال رہے کہ برطانوی پارلیمنٹ اس حوالے سے پہلے بھی آواز اٹھا چکی ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.