fbpx

ڈی ایم سیز میں بڑے پیمانے پر جعلی تقرریوں کا انکشاف

ڈی ایم سیز میں بڑے پیمانے پر جعلی تقرریوں کا انکشاف کیا گیا۔حیران کن طور پر سیکریٹریٹ ملازمین و افسران کی تصدیق کرنے لگا ۔

سال دو ہزار تیرہ میں ہونے والی بھرتیوں کو سپریم کورٹ نے کالعدم قرار دیا تھا۔ اعلی عدلیہ سے کالعدم قرار دیئے جانے والے ملازمین کو کراچی کی پانچ ڈسٹرکٹ میں کھپایا جانے لگا۔

بیشتر ڈی سیز اور ایم سیز نے معزز عدلیہ کے احکامات کے برخلاف جوائیننگ دینے سے انکار کردیا ہے ۔

ایک ڈسٹرکٹ سے دوسرے ڈسٹرکٹ میں جانے پر سروس بک تمام ریکارڈ اور لاسٹ پے سرٹیفیکیٹ جمع کروانا لازم ہوتا ہے ۔

ڈی ایم سی کورنگی میں ڈائیریکٹر ایڈمن سلمان حیدر کالعدم قرار دیئے ملازمین کو جوائیننگ دے دی۔

انعام علی کلہوڑ ٹیکسینش آفیسر ایل ٹی آر ڈی ایم سی کورنگی ماڈل زون میں جوائن کرلیا ۔انعام علی کلہوڑ کو سلمان حیدر نے ایم سی ہدایت پرجوائننگ دی ہے۔

انعام علی کلہوڑ کا کوئی سروس ریکارڈ موجود نہیں نہ ہی انکا لاسٹ پے سرٹیفیکیٹ جمع کروایا گیا ہے۔ڈائیریکٹر ون نوروز عباسی نے بغیر سروس ریکارڈ کے درجنوں جعلی بھرتی ملازمین کی تقرریان شروع کردی ۔

ان تمام ملازمین نے بغیر سروس ریکارڈ اور لاسٹ پے سرٹیفیکیٹ کے تقرریاں حاصل کی ہیں ۔ہونے والی تمام تقرریوں میں بے ضابطگی پر چیف سیکریٹری مکمل خاموش ہیں۔

سیکٹریٹ کی ہدایت پر بغیر سروس ریکارڈ کے حامل افراد کو ڈی ایم سیز نے جوائننگ دینے سے انکار کردیا۔

سروس ریکارڈ فراہم کرنے پر ہی جوائیننگ ممکن ہے جعلی ملازمین کو بیشتر جگہوں پر سبکی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

سروس ریکارڈ کے بغیر غلام سرور ہالیپوٹہ نے ایم سی کورنگی نے چارج سنبھال لیا ہے۔

بیشتر ڈی ایم سیز میں باآسانی تعیناتی ہوگئی ہے کچھ جگہوں پر کالعدم قرار دیئے گئے ملازمین کو روک دیا گیا۔