fbpx

ڈونلڈ ٹرمپ کوبھی توشہ خانہ کیس کا سامنا

واشنگٹن: امریکا کے سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کوبھی توشہ خانہ کیس کا سامنا ہے-

امریکی میڈیا کے مطابق سابق امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ کے خلاف غیر ملکی حکومتوں سے ملنے والے تحائف کا مکمل ریکارڈ محکمہ خارجہ کونہ دینے پرایوان نمائندگان کی کمیٹی نے تحقیقات شروع کردیں یہ جاننے کے بعد کہ ہزاروں ڈالر مالیت کی ایسی اشیاء ہوسکتی ہیں جو یا تو غائب ہیں یا ان کا صحیح طریقے سے پتہ نہیں لگایا گیا-

برطانوی وزیراعظم بورس جانسن کے خلاف عدم اعتماد ناکام ہوگئی

ایوان نمائندگان کی اصلاحات کمیٹی کی چئیرپرسن کیرولائن میلونی نے کہا کہ یہ معلوم نہیں کہ سابق صدرٹرمپ کو غیرملکی حکومتوں کے نمائندوں کی جانب سے کیا تحفے دئیے گئے اس معاملے میں سنگین بے ضابطگیاں سامنے آئی ہیں۔

انہوں نے سوال اٹھایا کہ کہیں سابق صدرپر بیرونی حکومتیں اثرانداز تو نہیں ہوئیں جن سے امریکی خارجہ پالیسی کے مفادات خدشات کاشکار بنے ہوں-

انہوں نے مزید کہا کہ ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے تحائف کا باقاعدہ ریکارڈ نہ رکھنے سے امریکا کی قومی سلامتی اورخارجہ پالیسی کے مفادات کوخطرہ لاحق ہوسکتا ہے اوریہ آئین کی کھلی خلاف وزری ہے۔

سی این این کے مطابق ہاؤس ڈیموکریٹس سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی "دفتر میں رہتے ہوئے غیر ملکی حکومتی اہلکاروں کے تحائف کا حساب کتاب کرنے میں بظاہر ناکامی” کی تحقیقات کر رہے ہیں، یہ جاننے کے بعد کہ ہزاروں ڈالر مالیت کی ایسی اشیاء ہوسکتی ہیں جو یا تو غائب ہیں یا ان کا صحیح طریقے سے پتہ نہیں لگایا گیا اس حوالے سے کمیٹی کی جانب سے خط جاری کیا گیا-

کمیٹی کا کہنا ہے کہ اسے محکمہ خارجہ سے معلومات موصول ہوئی ہیں جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ٹرمپ انتظامیہ نے ‘اس ذمہ داری کو ترجیح نہیں دی’ اور اس قانون کی تعمیل کرنے میں ناکام رہی جو صدر ٹرمپ کے عہدہ صدارت کے آخری سال کے دوران غیر ملکی تحفے کی رپورٹنگ کو کنٹرول کرتا ہے۔

خط میں کہا گیا کہ اس کے نتیجے میں، صدر ٹرمپ کو ملنے والے تحائف کی غیر ملکی ذرائع اور مالیاتی قیمت نامعلوم ہی رہی محکمہ خارجہ نے یہ بھی کہا کہ وہ ٹرمپ انتظامیہ کے دوران غیر ملکی تحائف وصول کرنے والے کچھ سرکاری اہلکاروں کی شناخت کے ساتھ ساتھ ان غیر ملکی تحائف کے ذرائع کا تعین کرنے سے قاصر ہے۔

نگران کمیٹی اب نیشنل آرکائیوز سے ان غیر ملکی تحائف کے بارے میں معلومات طلب کر رہی ہے جو ٹرمپ اور ان کے خاندان کے افراد کو سابق صدر کے دور میں ملے تھے۔

ایران میں ٹرین حادثہ، 13 افراد ہلاک، 50 زخمی 15 کی حالت تشویشناک

یہ تحقیقات ڈیموکریٹس کی جانب سے ٹرمپ انتظامیہ کے تحت وفاقی ریکارڈ اور اخلاقیات کے قوانین کی ممکنہ خلاف ورزیوں کی تحقیقات کے لیے کانگریس کے اختیار کو استعمال کرنے کی ایک اور کوشش ہے۔

کمیٹی کے خط میں کہا گیاکہ غیرحساب تحائف کےبارےمیں انکشافات "غیر ملکی حکومتوں کی طرف سےسابق صدر ٹرمپ پرغیر ضروری اثر و رسوخ کے امکانات کے بارے میں خدشات کوجنم دیتے ہیں جس سے امریکہ کی قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی کے مفادات کو خطرہ لاحق ہو سکتا ہےاور آئین کی ممکنہ خلاف ورزیوں کے بارے میں۔ ایمولیومینٹس کلاز، جو صدر کو دفتر میں رہتے ہوئے غیر ملکی اداروں سے فوائد حاصل کرنے سے منع کرتی ہے-

خط میں کہا گیا ہے کہ عوامی رپورٹنگ سے پتہ چلتا ہے کہ صدر ٹرمپ نے 2020 میں غیر ملکی ذرائع سے متعدد تحائف قبول کیے، پھر بھی یہ تحائف محکمہ خارجہ کی عوامی فہرست میں شامل نہیں ہیں جوکہ قانونی خلاف ورزی ہے-

سابق وزیر خارجہ مائیک پومپیو کے وکیل اور ٹرمپ کے نمائندے نے درخواست کا جواب نہیں دیا کمیٹی نے نیشنل آرکائیوز سے کہا ہے کہ وہ ان تحائف کے بارے میں تمام قابل اطلاق دستاویزات اور مواصلات فراہم کریں جو ٹرمپ اور ان کے خاندان کے افراد کو جنوری 2020 سے جنوری 2021 تک 20 جون تک موصول ہوئے تھے۔

20 ہزار خط گھر میں رکھنے والا ڈاکیا گرفتار