fbpx

دنیا پاکستان کو مسائل کا حصہ نہیں بلکہ مسائل کے حل کا حصّہ سمجھتی ہے ،قریشی

دنیا پاکستان کو مسائل کا حصہ نہیں بلکہ مسائل کے حل کا حصّہ سمجھتی ہے ،قریشی

وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پچھلی چار دہائیوں میں کوئی وزیر خارجہ اس سے قبل عراق کے دورے پر نہیں گیا –

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ عراق او آئی سی کا اہم ملک ہے اور مشرق وسطیٰ میں قیام امن کے حوالے سے عراق کا کردار اہمیت کا حامل ہے – فلسطین کے حوالے سے "سیز فائر” کی صورت میں ابتدائی کامیابی ملی -او آئی سی کی جانب سے پاکستان نے اقوام متحدہ ہیومن رائٹس کونسل میں قرارداد پیش کی – ہیومن رائٹس کونسل میں فلسطینیوں پر ڈھائے جانے والے مظالم اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کی تحقیقات کیلئے آزادانہ کمیشن کی قرارداد کی منظوری، اہم کامیابی ہے -عراقی ہم منصب کومسئلہ کشمیرسے متعلق بھی آگاہ کیاعراقی ہم منصب کو بتایا ہم خطےمیں امن سے رہنا چاہتے ہیں،یواے ای کیساتھ پاکستان کے اچھے تعلقات ہیں،

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ مستقبل میں یو اے ای سے مزید مضبوط تعلقات چاہتے ہیں،وزیر اعظم عمران خان صاحب کی بھی یو اے ای کے کرواؤن پرنس سے بات چیت ہوئی -پی  ایس ایل میچز کے دوران جب کچھ دقت پیش آئی تو میری یو اے ای کے وزیر خارجہ سے بات چیت کے نتیجے میں آسانی پیدا ہوئی- افغانستان کے مسئلے پراپوزیشن جماعتوں کوکل آگاہ کیا،افغانستان کے مسئلے پر پوزیشن کی تجاویز بھی لیں،ہندوستان پر سب سے زیادہ دباؤ، ان کی اندرونی بگڑتی ہوئی صورتحال کا ہے،اعدادوشمار کے مطابق انڈیا میں 230 ملین آبادی غربت کی لکیرسے نیچے رہ رہی ہے ، ہندوستان کی معیشت، غلط پالیسیوں کی وجہ سے 7.3فیصد تک سکڑ گئی ہے ،صرف اپریل کے مہینے میں 73 لاکھ لوگ ہندوستان میں بے روزگار ہوئے ہیں، انڈیا کو نہ چاہتے ہوئے بھی مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت بحال کرنا پڑے گی،پہلے افغانستان میں کچھ بھی ہوتا تھا تو اس کا الزام پاکستان پرلگا دیا جاتاتھا،آج ہماری کامیاب خارجہ پالیسی کے باعث، دنیا پاکستان کو مسائل کا حصہ نہیں بلکہ مسائل کے حل کا حصّہ سمجھتی ہے