پاکستان کی سفارتی محاذ پر کوششیں تحریر : سید محمد مدنی

0
128

یہ کافی عرصے بعد دیکھنے میں آیا کہ پاکستان اپنی سفارت کاری میں کامیاب ہو رہا ہے ہر روز بین الاقوامی سطح پر تعریف ہو رہی ہے ابھی کچھ ہی دن پہلے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کا چھیئترواں اجلاس ہؤا جس میں برطانوی وزیر اعظم نے دنیا میں درخت ماحولیاتی تبدیلی پر بھی بات کی اور اس حوالے سے وزیراعظم پاکستان عمران خان کا پودے لگانے کے ویژن کو سراہا اور تعریف کی اور اس پر عمل کرنے کے لئے مثال قرار دیا.

ہمارے ایک پڑوسی ملک کی کوشش رہی کے پاکستان کو اکیلا کیا جائے مگر ریاست پاکستان نے ایک مضبوط مؤقف اور بہترین دلائل اور حکمت عملی اپنائے رکھی.

وزیراعظم امن بات چیت اور صلح کے حامی ہیں اور انھوں نے ان سب کے لئے جتنا ہو سکا کوششیں کی بھی کوئی.

ایک امریکی صحافی نے وزیراعظم کی افغانستان سے امریکی ڈپلومیٹس کے بحفاظت انخلاء پر تعریفی کلمات کہے جس پر وزیر اعظم نے قرآن کی ایک آیت کا جواب دیتے ہوئے خط کا جواب دیا اور لکھا کے ہم امن اور انسانیت کے حامی ہیں.

وزیراعظم کے یہ اقدامات پاکستان کی سفارتکاری کو افق پر لے آئے ہیں. مسئلہ کشمیر پر دنیا کے بیشتر ممالک بھارت سے جواب طلب کر رہے ہیں.

پاکستان کو اقوام متحدہ رپریزینٹ کرنے والی ٹیم میں ایک محترمہ جو نابینا ہیں جس طریقے سے پاکستان کا مؤقف پیش کیا ہے اس سہرہ پاکستان کی ٹیم اور انھی کو جاتا ہے اس سے پہلے ہم نے دیکھا کے اقوام متحدہ میں مضبوط سفارت کاری کی کمی تھی.

پاکستان نے یورپی ممالک کو خاص کر فیٹف معاملے پر یہ باور کرایا کہ پاکستان کا دہشت گردی کا اڈہ ہونے کا الزام غلط ہے انتہائی جھوٹ پر مبنی ہے یہ سارا کام ہمارے ایک پڑوسی کا ہی ہے جس کا ایک بہت بڑا نیٹ ورک ڈس انفو لیب ہے جو ایکسپوز ہؤا اس کا مقصد جھوٹا پروپیگنڈا کرنا تھا یورپی ممالک سمیت پوری دنیا کو پاکستان کے بارے غلط معلومات فراہم کرنا تھا اس کے توڑ کے لئے پاکستان نے بہترین کام کیا اور دنیا کے ممالک سے بات چیت کی اور دنیا کو حقیقت بتائی.

وسطی ایشیائی ممالک کے دورے پر جس طرح پاکستان کی بات سنی گئی تعریف ہوئی اسے دنیا نے دیکھا پہلے پاکستان کی بات نہیں سنی جاتی تھی مگر اب جو تبدیلی آئی ہے اس سے فرق پڑ چکا ہے اور یہ فرق اسی وقت پڑتا ہے جب آپ کے پاس ایک مضبوط نڈر لیڈر شپ موجود ہو آپ وزیراعظم عمران خان کے سفارتی محاز پر کئے جانے والے اقدامات پر نظر دوڑائیں اور دیکھیں کہ کس طرح سے ریاست نے مفاد میں حکمت عملی اپنائی آپ اگر اس پر اختلاف کرتے بھی ہیں تو زرا بتائیں کہ کون سی ناکامی ہے پیڈ شدہ میڈیا یا وہ عناصر جو غلط خبریں دے کر پاکستان کے مؤقف کو غلط ثابت کرنے پر تُلے ہیں وہ پاکستان کے ہمدرد نہیں بلکہ دشمن ہیں.

پاکستان کی سفارت کاری نے آؤٹ کلاس پلے کیا ہے اور اب سفارت کاری پر بہترین جنگ لڑ رہی ہے ﷲ تعالیٰ ایسے ہی مزید کامیابیاں دے آمین.

Twitter Id @M1Pak

Leave a reply