fbpx

بجلی بلز میں اگلے ماہ سے فیول ایڈجسٹمنٹ چارجز کم ہونے کا امکان

پارلیمانی سیکرٹری برائے بجلی نے یقین دہانی کرائی ہے کہ اگلے ماہ سے بجلی کے بلز میں فیول ایڈجسٹمنٹ چارجز کم ہونا شروع ہوجائیں گے۔

بجلی بلوں پر فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کی اضافی رقم کے خلاف توجہ دلاؤ نوٹس قومی اسمبلی میں پیش کیا گیا۔ نوٹس جماعت اسلامی کے رکن مولانا عبدالاکبر چترالی نے پیش کیا۔

مولانا عبدالاکبر نے کہا کہ چترال میں ایک بل 2500 روپے کا آیا ہے جس میں 1800 روپے فیول ایڈجسٹمنٹ چارجز لگائے گئے ہیں، بجلی کمپنیاں ہر ماہ فیول ایڈجسٹمنٹ کے نام پر بھاری بھرکم رقم اینٹھ لیتی ہیں۔

پارلیمانی سیکرٹری بجلی رانا ارادت علی نے جواب دیا کہ یہ درست ہے بجلی بلوں میں اضافی فیول ایڈجسٹمنٹ زیادہ وصول کیا ہے، اگلے ماہ سے فیول ایڈجسٹمنٹ چارجز کم ہونا شروع ہوجائیں گے، اگر فیول ایڈجسمنٹ سرچارج وصول نہ کریں تو سرکلر ڈیٹ بڑھ جائے گا۔

جی ڈی اے کی رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر فہمیدہ مرزا نے بھی کہا کہ غریب لوگوں کی مختلف بجلی ٹیکسوں سے کمر توڑی جارہی ہے ، کراچی کے عوام کے لئے بجلی مزید زیادہ مہنگی کردی گئی ہے۔

یاد رہے کہ نیپرا نے گزشتہ جولائی میں مئی کے فیول چارجز ایڈجسٹمنٹ میں 7 روپے 90 پیسے فی یونٹ اضافے کی منظوری دی تھی۔

فیول ایڈجسٹمنٹ کا اطلاق کے الیکٹرک اور لائف لائن صارفین کےسوا تمام صارفین پر لاگو کیا گیا تھا۔

سی پی پی اے نے 7 روپے 96 پیسے فی یونٹ اضافے کی درخواست دی تھی،نیپرا نوٹیفیکیشن کے مطابق اتھارٹی نے27 جون 2022 کو ایف سی اے پر عوامی سماعت کی تھی۔

اس وقت نیپرا نے بتایا تھا کہ اپریل کا ایف سی اے صارفین سے 3 روپے 99 پیسے چارج کیا گیا تھا، مئی کا ایف سی اے اپریل کی نسبت 3 روپے 91 پیسے،جولائی میں زیادہ چارج ہوگا۔ جس کا اطلاق ڈسکوزکے تمام صارفین ماسوائے لائف لائن صارفین پر کیا گیا تھا، فیول ایڈجسٹمنٹ کا اطلاق کے الیکٹرک اور لائف لائن صارفین کے سوا تمام صارفین پر کیا گیا تھا۔