قبائلی اضلاع میں الیکشن، اپوزیشن کی شکست کی بڑی وجہ سامنے آ گئی، تفصیل جانیے اس رپورٹ میں‌

قبائلی اضلاع سابقہ فاٹا میں ہونے والے حالیہ انتخابات میں اپوزیشن جماعتوں‌ کا اتحاد نہ ہونے کی وجہ سے اپوزیشن بڑی شکست سے دورچار ہوگئی ہے،

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق اپوزیشن کے اتحاد سے صرف 3 حکومتی و آزاد ارکان جیت سکتے تھے باقی تمام سیٹیں اپوزیشن کی ہوتیں، سابقہ فاٹاکے صوبائی انتخابات میں کل 7لاکھ24ہزار28ووٹ ڈالے گئے، تحریک انصاف کو 1لاکھ 82ہزار23 ،آزادجیتنے والے تمام ارکان نے84ہزار599ووٹ حاصل کئے ،تیسرے نمبر پرجے یو آئی(ف)1لاکھ 12ہزار9سو99،چوتھے نمبرپرجماعت اسلامی کو56ہزار2سو 4 ووت ملے ، پانچویں نمبر پراے این پی کو 47ہزار9سو85،چھٹے نمبر پر پیپلزپارٹی کو28ہزار3سو89اورساتوں نمبر پر مسلم لیگ ن کو8ہزار2سو3ووٹ ملے ،پی ٹی آئی نے16،جے یوآئی نے 15،جے آئی ،اے این پی ،پی پی نے 13،مسلم لیگ نے5امیدوارکھڑے کئے تھے،

میڈیا رپورٹس کے مطابق سابقہ فاٹاکے صوبائی انتخابات میں کل 7لاکھ24ہزار28ووٹ ڈالے گئے تحریک انصاف کو 1لاکھ 82ہزار23 ووٹ،آزادجیتنے والے تمام ارکان کو84ہزار599،اور اپوزیشن کو2لاکھ53ہزار7سو80ووٹ ملے ہیں ۔ تحریک انصاف کوسب سے زیادہ 1لاکھ 82ہزار23 ووٹ،آزادجیتنے والے تمام ارکان کو84ہزار599،تیسرے نمبر پر جمعیت علماء اسلام (ف)کو1لاکھ 12ہزار9سو99،چوتھے نمبرپرجماعت اسلامی پاکستان کو56ہزار2سو 4،پانچویں نمبر پر عوامی نیشنل پارٹی کو 47ہزار9سو85،چھٹے نمبر پر پیپلزپارٹی کو28ہزار3سو89اورساتوں نمبر پر مسلم لیگ ن کو8ہزار2سو3ووٹ حاصل کئے،

تحریک انصاف نے تمام 16حلقوں میں امید وارکھڑے کئے تھے جبکہ جمعیت علماء اسلام (ف)نے 15حلقوں میں،جماعت اسلامی پاکستان نے13حلقوںمیں،عوامی نیشنل پارٹی نے 13، پیپلزپارٹی نے 13اور مسلم لیگ ن 5حلقوں میں اپنے امیدوارکھڑے کئے تھے ۔سابقہ فاٹا میں صوبائی انتخابات میں تحریک انصاف کو 5، آزاد6، جمعیت علماء اسلام (ف)3، جماعت اسلامی اور اے این پی نے ایک ایک سیٹ حاصل کی ہے، واضح رہے کہ قبائلی اضلاع میں الیکشن کو حکومت کی بڑی کامیابی قرار دیا جارہا ہے جبکہ ان انتخابات میں پی ٹی آئی نے ایک بار پھر میدان مار لیا ہے، جو آزاد امیدوار جیتے ہیں ان کا تعلق بھی تحریک انصاف سے ہی بتایا جاتا ہے اور وہ جلد پی ٹی آئی میں‌ باقاعدہ طور پر شامل ہو جائیں گے.
محمد اویس

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.