بھارت کا فیصلہ کن میچ میں آسٹریلیا سے کل ٹاکرا ، وینیو کی حیران کن ہسٹری سامنے آگئی

بھارت کا فیصلہ کن میچ میں آسٹریلیا سے کل ٹاکرا ، وینیو کی حیران کن ہسٹری سامنے آگئی

گابا میں کل سےجنگ،بھارت74برس سےمسلسل ناکام،آسٹریلیا31میچز سے ناقابل شکست رہا، کیا ہی عجب اتفاق ہے کہ بھارتی کرکٹ ٹیم کو آسٹریلیا کے خلاف فیصلہ کن ٹیسٹ میچ کے لئے ایک ایسے مقام کا رخ کرنا پڑا ہے،جہاں اس نے74برس کی تاریخ رکھتے ہوئے سنگل ٹیسٹ میچ بھی نہیں جیتا،ریکارڈ اتنا برا ہے لیکن وقت اتنا اچھا ہے کہ 4میچزکی سیریز تاحال برابر ہے اور بھارت اس مقام پر چوتھے و آخری مگر فیصلہ کن ٹیسٹ میچ کے لئے پہنچ چکا ہے۔

1947سے 2021 آگیا،یہ تہائی صدی بنتی ہے۔بھارت گابا برسبین میں ایک ٹیسٹ نھی نہیں جیت سکا،اب تک یہاں کھیلے گئے 6میچزمیں سے 5میں ناکام ہوا ہے اور واحد ٹیسٹ میچ ڈرا کھیل سکا ہے۔اسی مقام پر اس کی ایک مختصر اننگ بھی ہے جب ٹیم 58کے قلیل اسکور پر باہر ہوگئی تھی۔نومبر 1947میں اننگ اور 226رنزکے بھاری مارجن کی شلست سے کھاتہ کھلا تھا۔جنوری 1968میں 39 رنز،دسمبر 1977میں تو نہایت ہی کم مارجن 16رنزسے ناکامی ہوئی۔پھر نومبر 1991میں 10وکٹ کی شکست کا مزا چکھا تھا۔دسمبر 2003کا میچ ڈرا رہا تھا اور اب تک کا آخری میچ دسمبر 2014میں کھیلا گیا تھا جس میں بھارت 4وکٹ سے ہارگیا تھا۔

گابا برسبین بھارت کے لئے 74 برس سے ناقابل شکست قلعہ ثابت ہوا ہے،کیا اس بار تاریخ رقم ہوسکے گی۔کرکٹ کی دنیا میں 93 سالہ تاریخ رکھنے والا بھارت اکلوتی سیریز آخری دورے میں جیتا تھا جب 2018کے آخر میں کوہلی الیون آسٹریلیا میں ٹیسٹ ٹرافی اٹھانے والی پہلی ایشیائی ٹیم بنی تھی۔گابا برسبین ٹیسٹ جیتنے کا مطلب آسٹریلیا میں مسلسل دوسری ٹیسٹ سیریز اپنے نام کرنا ہے،بلاشبہ دونوں ہی کارنامے بڑے ہونگے۔

بھارتی ٹیم برسبین کے ہوٹل کی سختیوں کا بھی شکار تھی جس میں جمعرات کی صبح تک نرمی آگئی تھی،انجریز کے مسائل بھی الگ سے تھے،اجنکا رہانے کی قیادت میں کھیلنے والی سائیڈ کے کم سے کم 11کھلاڑی مکمل فٹ ہیں اور جمعہ 15جنوری سے شروع ہونے والے میچ میں آخری ٹیسٹ کی اسپرٹ برقرار رکھیں گے جب مہمان سائیڈ نے 5وکٹ کھونے کے باوجود 45 اوورز کے ہوتے ہوئے بھی بناکوئی وکٹ کھوئے ٹیسٹ بچالیا تھا۔

دوسری جانب آسٹریلیا ہے جسے اس کے ملک میں طویل فارمیٹ میں زیرکرنا ہمیشہ ہی مشکل رہا ہے،تم پین الیون گابا میں سنہرا ریکارڈ رکھتی ہے۔گرائونڈ کی 90 سالہ ہسٹری میں میزبان ٹیم نے دنیا کی مختلف ٹیموں کے خلاف 62 ٹیسٹ میچز کھیلے ہیں،40 میں وہ فتحیاب رہا،صرف 8میچز ہارا ہے،ایک میچ یہاں ٹائی ہوا جبکہ13 میچز ڈرا ہوئے ہیں۔کرک سین کے مطابق آسٹریلیا کے لئے انتہائی اطمینان بخش اور بھارت کے لئے نہایت خوفناک بات یہ ہے کہ میزبان ٹیم یہاں 1988 کے بعدکوئی ٹیسٹ میچ نہیں ہاری ہے۔آخری بار 33 برس قبل نومبر 1988میں ویسٹ انڈیز 9وکٹ سے کامیاب ہوگیا تھا۔

اس کے بعد سے آسٹریلیا نے برسبین گابا میں 31 ٹیسٹ میچز کھیلے ہیں،کوئی میچ نہیں ہارا۔ان میں سے 7میچز ڈرا ہوئے باقی 24میچز آسٹریلیا کے نام رہے ہیں۔یہاںاس نے آخری ٹیسٹ پاکستان کے خلاف نومبر 2019میں کھیلا تھا اور اننگ و5رنز سے جیت گیا تھا،اسی سال کے شروع میں سری لنکا کو اننگ اور 40 رنزسے شکست دی تھی۔2017میں انگلینڈ ہارا تھا اور 2016میں پاکستان سنسنی خیز مقابلےکے بعد39رنزسے ہار گیا تھا۔بھارت کے لئے ناقابل عبور گھاٹی کا سفر ہے جو بڑا مشکل ہوگا۔

ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ پوائنٹس ٹیبل پر بھارت کی دوسری پوزیشن ہے ،میچ ہارنے کی صورت میں نیوزی لینڈ سے وہ نیچے جاسکتا ہے۔
جمعہ کو میچ کے پہلے دن موسم صاف رہے گا لیکن میچ کے دوسرے دن ہفتہ،چوتھے اور پانچویں روزپیر اور منگل کو بارش کی پیش گوئی ہے۔ میچ پاکستانی وقت کے مطابق کل جمعہ صبح ساڑھے 4بجے شروع ہوگا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.