فرانس میں دہشت گردی، مسجد کے باہر فائرنگ سے امام مسجد سمیت 2 زخمی، حملہ آور کی خودکشی

فرانس میں مسجد کے باہر نامعلوم کار سوار نے فائرنگ کر کے امام مسجد اور ایک شخص کو زخمی کر دیا جبکہ بعد میں اس نے خود کو بھی گولی مار کر خودکشی کر لی ہے. اس واقعہ کے بعد فرانسیسی وزیرداخلہ نے ملک بھر میں تمام عبادت گاہوں کے سکیورٹی سخت کرنے کے احکامات جاری کئے ہیں۔

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق یہ واقعہ فرانس کے شہر برسٹ میں پیش آیا ہے جہاں‌ ایک مسجد کے باہر نامعلوم کار سوار شخص نے اچانک اندھا دھند فائرنگ کر دی. مذکورہ شخص کی فائرنگ سے امام مسجد اور ایک دوسرا شخص زخمی ہوگئے ہیں.

واقعہ کے بعد فرانسیسی پولیس حرکت میں آ‌گئی اور فائرنگ کرنے والے مجرم کا پیچھا کیا تاہم جیسے ہی حملہ آور نے دیکھا کہ وہ پکڑا جائے گا تو اس نے اپنے سر میں گولی مار کر خودکشی کر لی. میڈیا رپورٹس میں‌ بتایا گیا ہے کہ فرانس میں‌ ساحلی شہر بریسٹ میں سہہ پہر ساڑھے چار بجے کار سوار نے مسجد کے سامنے کھڑے افراد پر فائرنگ کی۔زخمیوں میں امام رشید ایل جے بھی شامل ہیں جنہیں رشید ابو حذیفہ بھی کہا جاتا ہے۔

مقامی پولیس کا کہنا ہےکہ وہ اس واقعہ سے متعلق تحقیقات کر رہی ہے اور حملہ آور سے متعلق جاننے کی کوشش کی جارہی ہے کہ وہ کون تھا، کہاں‌ سے آیا اور اس نے مسجد کے باہر فائرنگ کیوں‌کی؟.

واضح رہے کہ کچھ عرصہ قبل نیوزی لینڈ میں بھی ایک مسجد میں فائرنگ سے کئی لوگوں‌ کو شہید و زخمی کر دیا گیا تھا. مختلف مغربی ملکوں‌ میں انتہاپسندی کے ایسے واقعات دن بدن بڑھتے جارہے ہیں.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.