fbpx

فیاض چوہان کا عظمیٰ بخاری کو فون، کتنی بُری شکل والی تصویرہے، عظمیٰ بخاری

فیاض چوہان کا عظمیٰ بخاری کو فون، کتنی بُری شکل والی تصویرہے، عظمیٰ بخاری

صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان نے مسلم لیگ (ن) پنجاب کی ترجمان عظمیٰ بخاری کو فون کیا تا ہم عظمی بخاری نے فون سننے کی بجائے بند کر دیا

مسلم لیگ ن پنجاب کی ترجمان عظمیٰ بخاری نے لاہور میں پریس کانفرنس کی اس موقع پر انہیں فیاض چوہان کا واٹس ایپ پر فون آیا، ن لیگ پنجاب کے صدر رانا ثناء اللہ، سردار اویس لغاری اور میڈیا بھی کال کے وقت موجود تھا۔ عظمی بخاری کا کہنا تاھ کہ مجھے فیاض چوہان کا فون آ رہا ہے اور کتنی بُری شکل والی تصویر آ رہی ہے

دوسری جانب پنجاب کے صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان نے کہا ہے کہ میں نے عظمیٰ بخاری کو فون انہیں مبارکباد دینے کے لیے کیا تھا۔ فیاض الحسن چوہان کا کہنا تھا کہ عظمیٰ بخاری کے پاس جھوٹ بولنے، غلط اعدادوشمار اور فریب دینے کی زبردست صلاحیتیں ہیں۔انہوں نے بہترین طریقے سے گوئبلز کی طرز پر ن لیگی بیانیے کی ترجمانی کی۔چودہ نکمے لیگی ترجمان اتنی کامیابی سے جھوٹ نہیں بول سکے جتنا عظمیٰ بخاری نے بولا۔میرے بیانات کی وجہ سے ہی ن لیگی لیڈرشپ نے عظمیٰ بخاری کو پریس کانفرنس کا موقع دیا ہے۔عظمیٰ بخاری میری کولیگ ہیں، ان سے گفت و شنید ہوتی رہتی ہے۔ عظمیٰ بخاری نے دس سال تک بڑی محنت سے ن لیگ کی کامیاب ترجمانی کی۔ مجھے دکھ ہے کہ انہیں بیگم صفدر اعوان کی سائیڈ لینے پر کھڈے لائن لگایا گیا۔ اظہار ہمدردی کے لئے فون کر رہا تھا کیونکہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں نے آج علیحدہ پریس کانفرنس کی لیکن لیگی رہنماؤں نے عظمی بخاری کو اپنے ساتھ پریس کانفرنس میں نہیں بٹھایا تھا اس پر ان سے افسوس کرنا چاہتا تھا۔

وزیر جیل خانہ جات و ترجمان حکومت پنجاب فیاض الحسن چوہان نے ن لیگی ترجمانوں کی جانب سے تین سالہ حکومتی کارکردگی پر وائٹ پیپر جاری کرنے پر کہا ہے کہ نکمی اور ناکام ن لیگی قیادت کی طرح ہی نکمے ترجمانوں کی فوج نے پانی سے پکوڑے تلتے ہوئے صرف ہوائی باتیں کیں۔ انہوں نے کہا کہ 56 ارب کی آڈٹ رپورٹ کا رونا رونے والے ن لیگی ترجمان شریف خاندان کے دس سالہ دور پر بھی نظر ڈالیں جب فاقہ کشی کرنے کے بعد اقتدار میں آتے ہی انہوں نے 2008-09 میں 522 ارب روپے کی بے ضابطگیاں کیں۔ فیاض الحسن چوہان نے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ اس کے بعد 2009-10 میں 34 ارب، 2010-11 میں 1303 ارب اور 2011-12 میں 598 ارب کے آڈٹ پیراز بنے۔

فیاض الحسن چوہان نے مزید بتایا کہ 2008 سے 2018 تک شریف خاندان کے دس سالوں میں ٹوٹل 17429 ارب کی بے ضابطگیوں کے آڈٹ پیراز بنے۔ جاتے جاتے اپنے آخری سال میں قاتل اعلیٰ شہباز شریف نے 9114 ارب کی بے ضابطگیاں کیں کیونکہ وہ جانتے تھے انہیں مزید موقع نہیں ملے گا۔ انہوں نے کہا کہ یہ سارا کچا چٹھا تو ڈاکومنٹڈ ہے، باقی لوٹ مار اس سے کئی سو گنا زیادہ ہے۔ ترجمان حکومت پنجاب فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ سردار عثمان بزدار کا مقابلہ کرپشن کی ٹاپ سپیڈ سے تھا۔ انہوں نے شریف خاندان سے بزدار حکومت کا موازنہ کرتے ہوئے مزید بتایا کہ 1977 سے 2018 تک 12.9 ارب روپے کی ریکوری ہوئی جبکہ بزدار حکومت نے اپنے ایک سال میں اس سے دوگنا 25 ارب ریکور کیا۔ گزشتہ حکومتوں کے تقریباً چالیس سال میں 5221 آڈٹ پیرے سیٹل ہوئے۔ اس کے برعکس بزدار حکومت کے صرف ایک سال میں 4146 پیراز سیٹل ہوئے۔ گزشتہ چالیس سالوں میں پبلک اکاؤنٹس کمیٹیوں کے 893 ڈائریکٹوز پر عملدرآمد ممکن ہو سکا اور سردار عثمان بزدار کی قیادت میں صرف ایک سال میں 275 ڈائریکٹوز پر عملدرآمد کیا گیا۔ یہ اعدادوشمار بتاتے ہیں کہ سردار عثمان بزدار شوبازی نہیں، عوامی خدمت پر یقین رکھتے ہیں۔ سردار عثمان بزدار "نرم دم گفتگو گرم دم جستجو” کے قائل ہیں۔ فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ فنانشل مینجمنٹ میں شہباز شریف سردار عثمان بزدار کی جوتیوں کی خاک کے برابر ہیں۔اگلے دو سال بھی سردار عثمان بزدار عوامی خدمت اور فلاح کے اس جذبے کو جاری رکھیں گے۔

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!