مولانا فضل الرحمن نیب پیشی کے لیے شدت پسند تنظیم انصارالاسلام اور مدارس کے طلبا کا کندھا استعمال کریں گے

اسلام آباد:مولانا فضل الرحمن نیب پیشی کے لیے مدارس کے طلبا کا کندھا استعمال کریں گے ،اطلاعات کے مطابق قومی احتساب بیورو نے مولانا فضل الرحمان کو مالی بدعنوانیوں کے الزامات پر نیب خیبرپختونخوا میں پیش ہونے کا حکم دیا ہے۔

ذرائع کے مطابق مولانا راشد خالد محمود نے نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر مولانا کی پیشی ہوئی تو وہ اکیلے نہیں 30 لاکھ کارکنوں کے ساتھ پیش ہوں گے۔جمیعت علمائے اسلام ف کے رہنما نے مزید کہا کہ تمام اپوزیشن جماعتوں نے اس ناجائز، عوام دشمن حکومت سے ملک وقوم کو نجات دلانے کا فیصلہ کرلیا ہے، اس حکومت کے پاؤں اکھڑ چکے ہیں عوام جلد خوش خبری سنیں گے۔

ذرائع کے مطابق اس حوالے سے جمعیت علمائے اسلام ف نے مدارس کے طلبا کو تیاررہنے کا حکم دے دیا ہے ، ادھریہ بھی بھی معلوم ہوا ہے کہ مولانا فضل الرحمن شدت پسند تنظیم انصارالاسلام کے مسلح تربیت یافتہ اہلکاروں کو بھی نیب دفتر جانے کے لیے تیاررہنے کا حکم دے چکے ہیں‌

خیال رہے کہ مولانا فضل الرحمان سے ان کے اثاثہ جات کے ذرائع بتانے کیلئے نیب خیبرپختونخوا کے ایڈیشنل ڈائریکٹر کے سامنے پیش ہونے کا کہا گیا ہے۔واضح ہو کہ یہ طلبی اس وقت کی گئی ہے جب ایک روز پہلے اپوزیشن کی 11 جماعتوں کی کل جماعتی کانفرنس منعقد ہوئی تھی جس میں حکومت اور دیگر اداروں پر شدید تنقید کی گئی تھی، اور حکومت گرانے کیلئےتحریک شروع کرنے کا اعلان بھی کیا گیا تھادوسری جانب مولانا فضل الرحمان کی طلبی کے حوالے سے جمیعت علمائے اسلام ف کا موقف سامنے آگیا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.