fbpx

ایف بی آر نے واضح کردیا:ایک سےزائد جائیدادوں پرڈیمڈ ٹیکس لازمی ہوگا

اسلام آباد:ایک سےزائد جائیدادوں پرڈیمڈ ٹیکس لازمی قرار،اطلاعات کے مطابق فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے ایک سے زائد جائیدادیں رکھنے والے امیر لوگوں کیلیے ڈیمڈ ٹیکس کو بھی لازمی قرار دے دیا۔

ایف بی آر کی جانب سے اس حوالے سے نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا ہے، جس میں بتایا گیا ہے کہ ڈیمڈ ٹیکس کا اطلاق رواں ٹیکس ایئر 2022 سے ہی کردیا گیا ہے جو لوگ ٹیکس ائیر 2022 کیلیے انکم ٹیکس گوشوارے جمع کروائیں گے ان کے ساتھ ٹیکس دہندگان کو یہ فارم بھی پر کرکے جمع کروانا ہوگا۔

نوٹی فکیشن میں بتایا گیا ہے کہ جو ٹیکس دہندگان پہلے سے رواں سال کیلیے ٹیکس جمع کروا چکے ہیں انہیں بھی 31دسمبر تک یہ فارم الگ سے جمع کروانا ہوگا، ٹیکس دہندگان کو ڈیمڈ فارم میں اپنی زرعی، صنعتی،رہائشی و کمرشل سمیت تمام اقسام کی غیر منقولہ جائیداد کی تفصیلات فراہم کرنا ہوں گی۔

نوٹیفکیشن کے مطابق ٹیس دہندگان کو یہ بھی بتانا ہوگا کہ ڈیمڈ ٹیکس کے قابل اثاثوں کی مجموعی ویلیو(مالیت)کیا ہے، یہ بھی بتانا ہوگا کہ انکم ٹیکس آرڈیننس کی سیکشن سات ای کے تحت ڈیمڈ ٹیکس کیلئے کتنی ڈیمڈ آمدنی حاصل ہورہی ہے۔

ایف بی آر حکام کا کہنا ہے کہ حکومت کی طرف سے ڈیمڈ آمدنی پر ٹیکس عائد کیا گیا ہے اس ٹیکس کے تعین اور وصولی کیلئے ایف بی آر نے اکتوبر میں فارم متعارف کروایا تھا اور اب اس فارم کو رواں ٹیکس ائیر 2022 سے لازمی قرار دیدیا گیا ہے۔

ایف بی آر حکام کے مطابق ابھی رواں سال کے ٹیکس گوشوارے جمع کروانے کی توسیع شدہ تاریخ کی معیاد باقی ہے، اس لیے نوٹیفکیشن کے زریعے نہ ٹیکس دہندگان کوآگاہ کیا گیا ہے تاکہ وہ اپنے گوشواروں کے ساتھ یہ فارم بھی جمع کروائیں بلکہ جو لوگ پہلے سے گوشوارے جمع کروا چکے ہیں انہیں بھی کہا گیا ہے کہ وہ بھی اکتیس دسمبر تک الگ سے یہ فارم پر کرکے جمع کروائیں۔

ٹیکس دہندگان کی جانب سے فراہم کی جانیوالی تفصیلات کے تناظر میں قابل ٹیکس ڈیمڈ آمدنی پر مروجہ شرح کے مطابق ٹیکس وصول کیا جائے گا اس اقدام کا بنیادی مقصد رواں مالی سال کے دوران ٹیکس ریونیو بڑھانا اور مقرر کردہ ٹیکس وصولیوں کے اہداف کو حاصل کرنا ہے۔

کارکن تپتی دھوپ میں سڑکوں پرخوار،موصوف ہیلی کاپٹر پرسوار،مریم کا عمران خان پر طنز

خیبرپختونخوا حکومت کا ہیلی کاپٹر جلسوں میں استعمال کیا جا رہا ہے،وفاقی وزیر اطلاعات