fbpx

امریکا میں لڑائی جھگڑے اورقتل وغارت عروج پر:ٹارگٹڈ فائرنگ سے10سیاہ فام شہری ہلاک

نیویارک: امریکی ریاست نیویارک میں سفید فام حملہ آور کی ٹارگٹڈ فائرنگ سے 10 سیاہ فام شہری ہلاک ہو گئے، واقعے میں 3 شہری زخمی بھی ہوئے ہیں۔

امریکی میڈیا کے مطابق فائرنگ کا واقعہ بفیلو شہر میں پیش آیا جہاں فوجی یونیفارم پہنے مسلح شخص نے سپر مارکیٹ میں گولیوں کی بوچھاڑ کر دی، حملہ آور نے 13 افراد کو گولیاں ماریں جن میں 11 سیاہ فام شامل ہیں۔

پولیس کے مطابق ملزم کی عمر صرف 18 سال ہے اور وہ نسلی تعصب سے متاثر ہے، ملزم سے نفرت انگیز جرائم کے حوالے سے تفتیش کی جا رہی ہے، حملہ آور نے لوگوں پر فائرنگ کے مناظر کو سوشل میڈیا پر لائیو دکھایا۔

ادھر چند دن پہلے مصر کے شورش زدہ علاقے جزیرہ نما سینا سے متصل نہرسویز زون میں دہشتگردی کے حملے میں 11 فوجی ہلاک ہو گئے ہیں۔

مصری فوج نے ہفتے کے روزایک بیان میں کہا ہے کہ فوجیوں نے انتہا پسندوں کی سرگرمیوں کا مرکز علاقے میں ان کے دہشت گردی کے حملے کو ناکام بنانے کی کوشش کی تھی لیکن وہ خود اس میں کام آگئے ہیں۔

مصری فوج اسرائیل اور غزہ کی سرحد کے ساتھ واقع سیناء اور اس سے ملحقہ علاقوں میں ایک طویل عرصے داعش اور دوسرے جنگجو گروپوں کے خلاف نبردآزما ہے۔اس مہم میں مصری فوج کوگذشتہ برسوں میں بھاری جانی نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

فوج نے ایک بیان میں بتایا کہ نہرسویز کے سیناء میں واقع مشرقی کنارے کے علاقے میں فائرنگ کے نتیجے میں پانچ فوجی زخمی بھی ہوئے ہیں۔سکیورٹی فورسزاب دہشت گردوں کا پیچھا کررہی ہیں اورانھیں سیناء کے ایک الگ تھلگ علاقے میں محصور کرنے کی کوشش کررہی ہیں۔

مصر کو جزیرہ نما سینا میں ایک دہائی سے زیادہ عرصے سے مسلح جنگجوؤں کی بغاوت کاسامنا ہے۔2013 میں سابق صدر محمد مرسی کی معزولی کے بعد داعش سے وابستہ مقامی جنگجوؤں نے اپنی تخریبی سرگرمیاں اور سکیورٹی فورسز پر حملے تیزکردیے تھے۔ان کا قلع قمع کرنے کے لیے مصری فوج نے کئی ایک کارروائیاں کی ہیں۔فروری 2018 میں فوج اور پولیس نے شمالی سیناء میں صدر عبدالفتاح السیسی کے حکم پرعسکریت پسندوں کے خلاف ایک وسیع کارروائی شروع کی تھی۔

مصری حکومت کے فراہم کردہ سرکاری اعدادوشمار کے مطابق ان کارروائیوں کے شروع ہونے کے بعد سے اب تک ایک ہزار سے زیادہ مشتبہ عسکریت پسند اور درجنوں سکیورٹی اہلکارہلاک ہو چکے ہیں۔