fbpx

ویزہ کے باوجود پانچ پاکستانیوں کو بھارت نے واپس بھیج دیا

پاکستان سے بھارت جانے والے پانچ سندھی ہندووں کو بھارتی حکام نے بھارت میں داخل ہونےکی اجازت نہیں دی اور انہیں واپس پاکستان بھیج دیا۔

تفصیلات کے مطابق صوبہ سندھ سے تعلق رکھنے والے پانچ مقامی ہندووں کو اسلام آباد میں بھارتی ہائی کمیشن کی جانب سے ویزے جاری کر دئے گئے۔

پانچوں افراد گزشتہ روز واہگہ بارڈر کے راستے بھارت جانے کے لئے پہنچے۔ پاکستانی حکام نے ان کے پاسپورٹ چیک کئے اور ان کو بھارت جانے کی اجازت دے دی۔ ان افراد کو ویزے کے باوجود بھارتی امیگریشن حکام نے واپس بھیج دیا اور انہیں بتایا کہ بھارت نے کورونا کی وجہ سے گزشتہ سال مارچ میں بارڈر بند کر دئے تھے۔ ابھی تک بارڈر کو عام شہریوں کے لئےنہیں کھولا گیا۔ اس وجہ سے انہیں واپس پاکستان بھیج دیا گیا۔

مذکورہ افرادکوجمعہ کے روز دوبارہ واہگہ بارڈر آنے کی ہدایت کی گئی ہے اور انہیں کہا گیا ہے کہ آج پاکستان میں کورونا وبا کی وجہ سے پھنسے ہوئے 203 بھارتی شہری واہگہ سرحد کے راستے واپس انڈیا جائیں گے۔ مذکورہ پاکستانی شہری بھی آج دیگر پاکستانی، نوری ویزا کے حامل پاکستانیوں اور بھارتی شہریوں کے ساتھ واپس جائیں گے۔

آج 31 نوری ویزا کے حامل پاکستانیوں کے علاوہ 47 فریش ویزا کے حامل پاکستانی اپنے رشتہ داروں سے ملنے بھارت جائیں گے۔ پاکستانی اوربھارتی شہریوں کے لیے واہگہ سرحد خصوصی طور پر کھولی جائیگی۔

واضح رہے کہ پاکستان نے اگست 2019 میں کشمیر پر بھارتی قبضے کے خلاف بطور احتجاج واہگہ سرحد بند کردی تھی جب کہ بھارتی نے مارچ 2020 میں کورونا کی وجہ سے بارڈر بند کر دیا تھا۔  تاہم پاکستان نے چند روز قبل اپنی طرف سے عائد پابند اٹھاتے ہوئے سرحد کھول دی ہے لیکن بھارت کی طرف سے ابھی تک سرحد کھولنے کے احکامات جاری نہیں کئے گئے۔