fbpx

فلپائن :سیلاب اور لینڈ سلائیڈنگ کے باعث 30 ہزارافراد بے گھر ہوگئے

منیلا: فلپائن میں شدید بارشوں کے نتیجے میں سیلاب اور لینڈ سلائیڈنگ سے 25 افراد ہلاک جبکہ 30 ہزار افراد بے گھر ہوگئے ہیں۔

باغی ٹی وی : غیرملکی خبررساں ادارے”اے پی” کی رپورٹ کے مطابق فلپائن کے وسط اور جنوب میں موسلادھار بارشوں سے سیلابی اور لینڈ سلائیڈنگ کی صورت حال پیدا ہوئی جس کے باعث نظام زندگی درہم برہم ہوگیا۔

شہر کے پولیس سربراہ لیفٹیننٹ کرنل جومین کولاڈو نے بتایا کہ اتوار اور پیر کو وسطی صوبہ لیٹے کے بے بے شہر کے چار دیہات میں مٹی کے تودے گرنے سے 22 دیہاتی ہلاک ہو گئے۔ انہوں نے کہا کہ لینڈ سلائیڈنگ میں کم از کم 6 دیگر افراد کے لاپتہ ہونے کی اطلاع ہےریسکیو عملے کی جانب سے متاثرین کی مدد کے لیے آپریشن جاری ہے۔

نیویارک ٹائمز اسکوائرپرزورداردھماکہ

کولاڈو نے ڈی زیڈ بی بی ریڈیو نیٹ ورک کو بتایا کہ "ایک گاؤں میں مٹی کا تودہ گرا اور بدقسمتی سے دیگر متاثرین بھی پانی کے بہاؤ میں بہہ گئے۔” "کم از کم چھ لاپتہ تھے لیکن مزید ہو سکتے ہیں۔”

اعدادوشمار کے مطابق موجودہ صورت حال کے سبب 30 ہزار خاندان بے گھر ہوئے جن میں سے سیکڑوں افراد کو عارضی طور پر محفوظ مقامات پر منتقل کردیا گیا۔ حکام کا کہنا ہے کہ مشکل حالات پر قابو پا لیں گے۔

ساحلی محافظوں، پولیس اور فائر فائٹرز نے سیلاب زدہ کمیونٹیز کے کچھ دیہاتیوں کو بچایا، جن میں سے کچھ اپنی چھتوں پر پھنسے ہوئے تھے۔ وسطی سیبو شہر میں، اسکول اور کام پیر کو معطل کر دیا گیا تھا اور میئر مائیکل راما نے ہنگامی فنڈز کی تیزی سے ریلیز کی اجازت دینے کے لیے آفت کی حالت کا اعلان کیا تھا۔

کوٹری میں ریلوے ٹریک پر دھماکا ہوگیا:وزیرستان میں ڈرون حملہ؟حقیقت سامنے آگئی

خیال رہے کہ فلپائن کو ہر سال سمندری طوفان کا بھی سامنا کرنا پڑتا ہے فلپائن میں ہر سال کم از کم 20 طوفان اور ٹائفون آتے ہیں، زیادہ تر برسات کے موسم میں جو جون کے آس پاس شروع ہوتا ہے۔ حالیہ برسوں میں شدید گرمی کے مہینوں میں بھی کچھ طوفان آئے ہیں۔

تباہی کا شکار جنوب مشرقی ایشیائی قوم بھی بحرالکاہل کے "رنگ آف فائر” پر واقع ہے، جہاں دنیا کے بہت سے آتش فشاں پھٹنے اور زلزلے آتے ہیں۔

پی ٹی آئی کارکنان کا مسجد میں گھس کر امام مسجد پر حملہ، ویڈیو وائرل