ورلڈ ہیڈر ایڈ

طبی ماہرین نے ایک نسخہ کیمیا بتادیا ، پھل کھاو،سبزیاں پکاو، جوڑوں کی درد کو بھگاو

لندن: اللہ کی نعمتوں کاشکرادا کرنا چاہیے ، طبی ماہرین نے قدرت کی طرف سے انسانوں کے لیے جو پھل اور سبزیاں پیدا کی ہیں ان میں‌صحت بھی رکھی اور شفا بھی، اسی حوالے سے ایک نئی تحقیق سامنے آئی ہے جس کے مطابق سبزیاں، پھل اور دالوں پر مبنی خوراک اپناکر جوڑوں کے درد اور گٹھیا کے مرض کی شدت کو بڑی حد تک کم کیا جاسکتا ہے۔ اس بات کا انکشاف ایک طویل تحقیق کے بعد کیا گیا ہے۔

برطانوی طبی ماہرین نے بڑی تحقیق کے بعد انسانی صحت کے حوالے سے پھلوں اور سبزیوں کی افادیت کا جائزہ لے کر یہ حیقیقت کھول کر بیان کردی ہے کہ ، آرتھرائٹس درحقیقت ایک خودامنیاتی مرض ہے جس میں انسان کے جسم کا اپنا دفاعی نظام ازخود بیدار ہوجاتا ہے اور 100 میں سے ایک فرد کو زندگی بھر تکلیف دو جوڑوں کے مرض کا شکار بنادیتا ہے۔ ایک خیال یہ ہے کہ اگر مناسب خوراک استعمال کی جائے تو اس سے مفید اجزا خون میں جاتے ہیں جو گٹھیا کے مرض کی شدت کم کرتے ہیں۔

برطانوی طبی ماہرین نے جوڑوں کی درد کے اسباب اور علاج کے حوالےسے 2015 میں تجربہ کیا تھا جس میں جوڑوں کے درد کے مریضوں کو دو ماہ تک سبزیاں اور دالیں کھلائی گئی تھیں۔ دوسرے گروپ میں مریضوں نے مومول کے مطابق گوشت اور چکنائیوں کا استعمال جاری رکھا اور دوماہ بعد سبزیاں کھانے والے گروپ نے ہڈیوں میں درد اور جلن کی شدت میں کمی کا اعتراف کیا تھا۔

برطانوی طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ پھلوں اور سبزیوں میں چکنائی کم ہوتی ہے اور فائبر(ریشے) کی مقدار زیادہ ہوتی ہے جس کی بنا پر جوڑوں میں درد اور جلن کی شدت کم ہوتی جاتی ہے۔ برطانوی طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ اسی بنا پر جوڑوں کے درد کے مریضوں کے لیے سبزیوں اور پھلوں کی خوراک بطور دوا تجویز کی جارہی ہے۔

برطانوی ماہرین کا کہنا ہےکہ بہت زیادہ تجربات اور تحقیقات کے بعد اس بات کی تائیدوتصدیق ہوگئی ہے کہ سبزی، پھل، پورے اناج اور دالوں وغیرہ کے استعمال سے جوڑوں کے درد اور گٹھیا کے مریضوں کو افاقہ ہوسکتا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.