fbpx

علی امین گنڈاپور کے آزاد کشمیر انتخابات کی مہم میں مزید حصہ لینے پر پابندی عائد،نونی خوش ہوگئے

مظفر آباد : علی امین گنڈاپور کے آزاد کشمیر انتخابات کی مہم میں مزید حصہ لینے پر پابندی عائد،نونی خوش ہوگئے ،اطلاعات کے مطابق آزاد کشمیر الیکشن کمیشن نے وفاقی وزیر علی امین گنڈاپور پر کسی بھی انتخابی جلسے میں شرکت اور تقریر کرنے پر پابندی عائد کر دی ہے۔ اس حوالے سے آزاد کشمیر الیکشن کمیشن نے چیف سیکرٹری کو خط لکھ کر حکم دیا ہے کہ فیصلے پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے۔

ذرائع کے مطابق اس خط میں کہا گیا ہے کہ چیف سیکرٹری الیکشن کمیشن کے فیصلے پر عملدرآمد کر کے جلد رپورٹ جمع کروائیں۔ آزاد کشمیر الیکشن کمیشن کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا ہے کہ علی امین گنڈاپور کی اشتعال انگیز تقاریر کے باعث امن و امان کی صورتحال خراب ہونے کا خدشہ ہے، اسی لیے ان پر انتخابی مہم میں مزید حصہ لینے پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا گیا۔

 

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں علی امین گنڈاپور کی جانب سے آزاد کشمیر میں ایک جلسے کے دوران پیپلز پارٹی اور ن لیگ کے بانی رہنماوں کیلئے انتہائی اشتعال انگیز زبان استعمال کی گئی تھی۔

علی امیند گنڈاپور نے ذوالفقار علی بھٹو کو غدار جبکہ نواز شریف کو ڈاکو قرار دیا تھا۔ وفاقی وزیر کی اس تقریر کے بعد گزشتہ روز ان پر اور مراد سعید پر ن لیگ کے مشتعمل کارکنوں کی جانب سے حملہ کیا گیا تھا۔

اس حوالے سے مظفر آباد پولیس کے مطابق گزشتہ روز وفاقی وزیر کے قافلے پر پر پتھرائو کے الزام میں 4 ملزمان کو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔پولیس کے مطابق علی امین گنڈا پور کے قافلے پر حملے میں ملوث مزید10 افراد کی گرفتاری کیلئے چھاپے مارے جارہے ہیں۔

پولیس حکام کے مطابق وفاقی وزیر کے قافلے پر منظم منصوبے کے تحت راستہ روک کر پتھرائو کیا گیا، یہ بھی یاد رہے کہ ن لیگی رہنما وزیراعظم راجہ فاروق حیدر نے دھمکی دی تھی کہ اگر ان کے حلقے میں کوئی پی ٹی آئی کا وزیریا ممبراسمبلی آیا تو وہ اس کا سخت ردعمل دیں گے ، مبصرین کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی قافلے پر حملہ اسی سلسلے کی کڑی ہوسکتی ہے