fbpx

جی 20 اجلاس میں گفتگو لیک ہونے پر چینی صدرکا کینیڈن وزیراعظم سےناراضگی کا اظہار

جکارتا: جی 20 اجلاس کے موقع پرگفتگو لیک ہونے پر چین کے صدر شی جن پنگ کینیڈا کے وزیراعظم جسٹن ٹروڈو سے ناراض ہوگئے۔

باغی ٹی وی : سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ چینی صدر شی جن پنگ کیمروں کی موجودگی میں کینیڈا کے وزیراعظم جسٹن ٹروڈو سے بات چیت کررہے ہیں۔


انڈونیشیا میں G20 سربراہی اجلاس میں میڈیا پول کے ذریعے ریکارڈ کیے گئے ایک کلپ میں، بظاہر مایوس شی نے کینیڈا کے وزیر اعظم کو ایک طرف کھینچ لیا اور کہا کہ دونوں رہنماؤں کے درمیان پچھلی بات چیت کے بارے میں تفصیلات میڈیا کے ساتھ شیئر کرنا "مناسب نہیں” تھا، تجویز کیا کہ ٹروڈو کے نقطہ نظر میں "اخلاص” کی کمی تھی۔

چینی صدرنے کینیڈا کے وزیراعظم سے جی 20 اجلاس کے دوران کی گئی گفتگو لیک ہونے پر ناراضی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اجلاس میں کی گئی ہماری گفتگو اخبارات کو لیک کردی گئی یہ مناسب بات نہیں۔ گفتگو اس پیرائے میں نہیں کی گئی تھی۔ اگرآپ کی طرف سے ایمان داری کا مظاہرہ کیا جاتا۔

سابق امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ کی تنقید پرصدرجوبائیڈن بھی برس پڑے

کینیڈا کے وزیراعظم جسٹن ٹروڈو نے کہا کہ کینیڈا میں ہم آزادانہ اورکھلے عام مکالمے پر یقین رکھتے ہیں اور یہی ہم جاری رکھیں گے”ہم مل کر تعمیری طور پر کام کرنا جاری رکھیں گے لیکن ایسی چیزیں ہوں گی جن پر ہم متفق نہیں ہوں گے۔

جس پرچین کے صدر نے کہا کہ اس کے لیے کوئی اصول اور طریقہ کار بنائیں۔ چینی صدر شی جن پنگ اس گفتگو کے بعد کینیڈین وزیراعظم سے مصافحہ کرکے چلے گئے۔

ٹروڈو کی ٹیم نے کہا کہ اس نے اور شی نے روس کے یوکرین، شمالی کوریا پر حملے اور دسمبر میں ہونے والی Cop15 بائیو ڈائیورسٹی کانفرنس کی اہمیت پر بھی تبادلہ خیال کیا، جہاں چین اور کینیڈا "ماحولیاتی تبدیلیوں” کوششوں میں ممالک کی مشترکہ میزبانی کریں گے-

شہری نے 30 لاکھ ڈالر،پاکستانی 6 ارب 70 لاکھ روپے حق مہر ادا کر دیا