گستاخانہ خاکوں کی اشاعت اور فرانسیسی صدر کے مسلمانوں اور اسلام مخالف بیانات پر شوبز شخصیات برہم

پاکستان شوبز فنکاروں نے فرانسیسی اخبار چارلی ہیبڈو کے شائع کردہ گستاخانہ خاکوں اور فرانسیسی صدر کے مسلمانوں اور اسلام مخالف بیانات دینے پر فرانسیسی صدر یمانوئیل میکرون سے مسلمانوں کے جذبوت مجروح کرنے پر معافی مانگنے کا مطالبہ کیا ہے-

باغی ٹی وی : فرانس کے بعد جانب سے گستاخی کے حالیہ واقعات اور فرانس کے صدر کے بیانات نے دنیا بھر کے مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کیا ہے فرانس کی جانب سے کی جانے والی اس حرکت پوری مسلم امہ شدید غم و غصے کی کیفیت میں ہے اور فرانس حکومت کے خلاف ریلیوں کی صورت میں اور سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر احتجاج کیا جا رہا ہے اور یہاں تک کہ پاکستان سمیت دیگر مسلم ممالک میں فرانس کی تمام قسم کی پراڈکٹ کا بائیکاٹ کیا جا چُکا ہے-

فرانسیسی اخبار اور صدر کے مسلمانوں کی اسلام مخالف حرکت پرجہاں دنیا بھر کے مسلمانوں کے جذبات مجروح ہوئے ہیں وہیں پاکستان شوبز سے تعلق رکھنے والے افراد بھی غمزدہ ہیں اور انہوں نے فرانس کے اس عمل پر آواز بھی بُلند کی ہے-

شوبز سے اسلام کی خاطر عارضی طور پر کنارہ کشی اختیا کرنے والی اداکارحمزہ علی عباسی نے فرانس کے اس عمل کی مذمت کرتے ہوئے ٹوئٹر پر لکھا کسی بھی مذہب سے اختلاف کرنا یا اس پر تنقید کرنا آپ کا حق ہے لیکن جانتے بوجھتے دانستہ طور پر اشتعال دلانے کے ارادے سے طنز کرنا آپ کا حق نہیں۔


انہوں نے کہا کہ یہ غیر اخلاقی اور غیر مہذب ہے۔ اور ہم مسلمان دنیا کو یہ امن اور مذاکرات کے طریقے سے سمجھا سکتے ہیں۔ قتل، جنگ اور دشمنی سے نہیں۔

حمزہ علی عباسی نے مزید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اگر مسلمان رام مجسمے پر گائے کا گوشت پھینکنے کا مقابلہ ترتیب د یںتو کیا ہوگا؟ یا ایک عبادت خانے میں سب سے زیادہ خنزیر کو ذبح کرنے سے یا جو انتہائی کسی صلیب پر تھوکنے سے اگر کسی کو تکیلف ہو سکتی ہے تو اسی بات کا اطلاق 1.5 بلین سے زیادہ لوگوں کے ذریعہ مقدس ہونے والے شخص کے توہین آمیز خاکے بنانے کے معاملے میں بھی ہوتا ہے-


ادکار احسن خان نے ٹوئٹر پر فرانس میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کی مذمت کرتے ہوئے کہا اگر فرانس واقعی ایک جمہوریہ ہے تو پھر وہاں آزادی ہونی چاہئیے۔ لیکن آزادی کے نام پر دوسرے مذاہب کی توہین نہیں ہونی چاہیئے۔ میں اپنے پیارے نبی حضرت محمد مصطفیٰﷺ کی شان میں ہونے والی اس گستاخی پر اپنے پورے دل سے احتجاج کرتا ہوں۔ اب اس چیز کو (گستاخانہ خاکوں کی اشاعت) کو رکنا ہوگا۔


اداکارفیروز خان نے بھی ٹوئٹر پر فرانس میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کے خلاف آواز اٹھاتے ہوئے کہا ’حضرت محمدﷺ سب سے پہلے‘ اس کے ساتھ انہوں نے فرانسیسی صدر ایمانوئیل میکرون کی جانب سے تمام مسلمانوں سے معافی مانگنے اور فرانسیسی پروڈکٹس کے بائیکاٹ کا ہیش ٹیگ بھی استعمال کیا۔


اداکار و میزبان فخر عالم نے فرانس میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کےی مذمت کی اور اپنے ٹوئٹر پیغام میں لکھا کہ اسلامو فوبیا: اظہار رائے کی آزادی پر میکرون غلط کیوں ہے؟

اس سے قبل فیس بُک پر ایک مسلمانوں صارفین جہاں فرانس کی اس گستاخی پر فرانس کی بھر پور مذمت کی احتجاج کیا اور غم و غصے کا اظہارکرتے ہوئے فرانسیسی پرڈکٹس کا بائیکاٹ کیا وہیں پاکستان کی حکومت سے پاکستان میں مقیم فرانسیسی سفیر کو ملک سے نکالنے کا مطالبہ کیا صرف یہی نہیں صارفین غم و غصے کی شدید کیفیت میں پاکستانی حکومت اور وزیر اعظم عمران خان کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا –

علاوہ ازیں فیس بُک صارفین کی جانب سے نبی پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر درود پاک پڑھنےکا انعقاد کیا گیا ہے اور صارفین اپنی پوسٹ مین نبی پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر درود پاک پڑھ رہے ہیں اور کل رات دس بجے تک اس ٹرینڈ میں تین ملین سے زائد لوگ شامل ہوئے اور نبی پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پر دورد پاک کے گلدستے نچھاور کر تے ہوئے اپنے پیارے نبی اور اللہ کے محبوب نبی آخر الزمان صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے محبت و عقیدت کا اظہار کیا-

واضح رہے کہ فرانس میں اسلام اور مسلمانوں کے حوالے سے مسلسل نفرت انگیز بیانات اور اقدامات سامنے آرہے ہیں گزشتہ ماہ رسوائے زمانہ اخبار چارلی ہیبڈو کی جانب سے ایک مرتبہ پھر توہین آمیز خاکوں کی اشاعت اور اس کے بعد بعد ایک مقامی اسکول کے بچوں میں توہین آمیز خاکوں کا پرچار کرنے والے استاد کے قتل کے بعد فرانسیسی صدر نے ایک تقریب میں اسلام کے بارے میں کہا کہ یہ ایک بحران میں گھرا مذہب ہے اور یہ تاثر بھی دیا کہ مسلمان فرانس میں علیحدگی پسند جذبات کو ہوا دے رہے ہیں-جس سے مسلمانوں میں غم و غصے کی لہر دوڑ گئی ہے-

فرانس کی جانب سے گستاخی کے حالیہ واقعات کے بعد تین ملین سے زائد فیسبک صارفین کا…

فرانسیسی سفیر کر ملک بدر کرو، پاکستانی سوشل میڈیا صارفین کا حکومت سے مطالبہ

فرانس کی اسلام دشمنی،پنجاب اور کے پی اسمبلی میں قرارداد مذمت جمع

پاکستان سمیت تمام مسلمان ممالک فرانس کا بائیکاٹ کریں،چودھری پرویز الہیٰ کا بڑا مطالبہ

گستاخانہ خاکوں اورفرانسیسی صدر کے معاملے پر پاکستان کا فرانس سے شدید احتجاج

پاکستان پہلا ملک جس نے فرانسیسی سفیرکو طلب کیا، گساخانہ خاکوں کا مسئلہ کہاں کہاں اٹھائیں گے، طاہر اشرفی نے بتا دیا

وزیراعظم کافیس بک کے بانی مارک زکربرگ سے اسلام مخالف مواد پر فوری پابندی کا مطالبہ

فرانس کے اسلام مخالف بیان پر پاکستان کا بڑا فیصلہ، وزیر خارجہ نے بتا دیا

فرانس میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت، مولانا فضل الرحمان نے بڑے احتجاج کا اعلان کردیا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.